وفاقی دارالحکومت میں پہلے کرشنامندر کی چاردیواری کا کام شروع

وفاقی دارالحکومت میں پہلے کرشنامندر کی چاردیواری کا کام شروع
 وفاقی دارالحکومت میں پہلے کرشنامندر کی چاردیواری کا کام شروع

  

اسلام آباد / عمرکوٹ(سید ریحان شبیر )قیام پاکستان کےبعد وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں پہلے کرشنامندر کی چاردیواری کا کام شروع,  پاکستان تحریک انصاف کےاقلیتی ایم این اے لال مالھی نے عمرکوٹ کے صحافیوں کو بتایا کہ اسلام آباد میں  ہندوپنچایت اسلام آباد کی جانب سے سیکٹر 9 میں ایک کرشنا مندر گرائونڈ بریکنگ سیریمنی کا انعقاد کیا گیا , اس موقع پر  پارلیمانی سیکریٹری ہیومن رائٹس لال مالھی مہمان خاص تھے ۔

سال 2017 میں نیشنل کمیشن فار ہیومن رائٹس کے احکامات پر سی ڈی اے کی جانب سے اسلام آباد کی ہندو پنچائت کو چار مرلےکا  پلاٹ الاٹ کیا گیا تھاجس کی  چاردیواری کا کام ہندو  پنچایت کی جانب سے شروع کر دیا گیا ہے۔ اسلام آباد  میں 1947 کے بعد بننے والا پہلا مندر ہوگا ، اس وقت دارالحکومت میں کوئی  مندر فنکشنل  نہیں  ہے  ۔

میڈیا سے  ٹیلیفون پر  بات چیت کرتے ہوئے ایم این اے لال مالھی نے کہا  ایک طرف    کشمیر میں اقلیتوں کو مسجد میں جانے سے روکا جا رہا ہے اور ہم اسلام آباد  میں شری کرشن بھگوان کے مندر کی تعمیر کر رہے ہیں ۔ لال مالھی نےکہا کہ پاکستان میں بسنے والی اقلیتوں کومکمل آزادی حاصل ہے پاکستان کے ہندو سچے محب وطن ہیں ، پاکستانی حکومت کی پالیسی ہے کہ اقلیتوں کو حقوق دیئے جائیں ۔ ایم این اے لال مالھی نے حکومت سے اپیل کی کہ مندر کی تعمیر کے لیے فنڈز مہیا کیے جائیں ، اس موقع پر پنچایت کے رہنماؤں  پریتم داس، مجہش چودھری، اشوک کمار، چمن لال اور دیگر موجود تھے.

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -سندھ -عمرکوٹ -