جھیل میں تیرتی بوتل سے100سال پرانا خط برآمدلیکن اس پر کیا لکھاتھا؟ یقین کرنا مشکل

 جھیل میں تیرتی بوتل سے100سال پرانا خط برآمدلیکن اس پر کیا لکھاتھا؟ یقین کرنا ...
 جھیل میں تیرتی بوتل سے100سال پرانا خط برآمدلیکن اس پر کیا لکھاتھا؟ یقین کرنا مشکل
سورس: File/Wikimedia Commons

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکی ریاست مشی گن میں ایک فیملی سیاحت کے لیے گئی جہاں جھیل میں وہ کشتی رانی سے لطف اندوز ہوتے رہے۔ جھیل میں ہی جب فیملی اپنی موج مستی کر رہی تھی، اس چھوٹے سے جہاز کی کپتان جینیفر ڈوکر اپنے جہاز کی کھڑکیوں کے شیشے صاف کرنے لگی اور اس دوران اسے جھیل میں تیرتی ایک بوتل نظر آئی جس میں سے ایسی چیز برآمد ہو گئی کہ سن کر آپ بھی دنگ رہ جائیں گے۔ 

ڈیلی سٹار کے مطابق جینیفر ڈوکر نے اس بوتل کو پانی سے نکالا اور کھول کر دیکھا تو اس میں ایک خط موجود تھا جو لگ بھگ 100سال پرانا تھا۔ یہ خط 1926ءمیں لکھا گیا تھا۔ خط میں لکھا تھا کہ ”جس کسی کو بھی یہ بوتل ملے، وہ یہ خط مشی گن کے شہر شیبوئیگن میں رہنے والے جارج مورو تک پہنچا دے۔“

جینیفر ڈوکر نے یہ اس خط کی تصویر ایک فیس بک پوسٹ میں شیئر کر دی اور تمام معاملہ لوگوں کو سنا دیا اور ان سے درخواست کی کہ وہ جارج مورو نامی شخص کو ڈھونڈنے میں اس کی مدد کریں۔ چند دن گزرنے پر بالآخر ایک فیملی نے جینیفر ڈوکر سے فیس بک پر رابطہ کیا اور اسے بتایا کہ جارج مورو ان کے گھر کے قریب ہی رہتا تھا ۔ بہت سال پہلے اس کا انتقال ہو چکا ہے اور اب اس کی بیٹی اس گھر میں رہتی ہے۔

جارج ڈوکر اس فیملی کے بتائے ہوئے پتے پر پہنچی تو وہاں جارج مورو کی بیٹی مشعیل پریمیو نے اس کا استقبال کیا۔ مشعیل نے بتایا کہ جارج ڈوکر کوئی اور نہیں بلکہ وہی شخص تھا جس نے یہ خط لکھا تھا۔ جینیفر نے وہ خط جارج کی بیٹی کے حوالے کر دیا۔ مشعیل نے بتایا کہ ”یہ خط پانے پر مجھے شدید حیرت بھی ہو رہی ہے اور خوشی بھی، تاہم میں جانتی ہوں کہ میرا والد اس طرح کی چھوٹی چھوٹی چیزیں کرتا رہتا تھا۔ مثال کے طور پر ہم ایک بار جب ہم اپنے گھر کا تہہ خانہ تعمیر کروا رہے تھے تو باقی لوگ اپنے اپنے کام میں مگن تھے اور میرے باپ نے ایسا ہی ایک خط لکھ کر دیوار کے اندر رکھوا دیا تھا۔ “

مزید :

ڈیلی بائیٹس -