انجینئرنگ یونیورسٹی اساتذہ کے صبر کا پیمانہ لبریز ، انتظامی کمیٹیوں کے بائیکاٹ اور وزیر اعلی ہاؤس کا گھیراؤ کرنے کی دھمکی دے دی 

 انجینئرنگ یونیورسٹی اساتذہ کے صبر کا پیمانہ لبریز ، انتظامی کمیٹیوں کے ...
 انجینئرنگ یونیورسٹی اساتذہ کے صبر کا پیمانہ لبریز ، انتظامی کمیٹیوں کے بائیکاٹ اور وزیر اعلی ہاؤس کا گھیراؤ کرنے کی دھمکی دے دی 

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن)  ٹیچنگ سٹاف ایسوسی ایشن یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی( یوای ٹی)لاہور کے زیر اہتمام پریس کلب کے باہر احتجاجی مظاہرہ،پنجاب حکومت سے ٹیکنیکل الاؤنس کا مطالبہ، ٹیوٹاکے اساتذہ اور فپواسا پنجاب کے رہنما ؤں نے بھی مظاہرے میں شرکت کی۔ مظاہرے کی قیادت  ٹی ایس اے کے صدرڈاکٹر امجد حسین، جنرل سیکرٹری ڈاکٹر آصف رفیق  فپواسا پنجاب کے صدر ڈاکٹر عبدالستار ملک،ٹیکنیکل اداروں کے انجینئرز، اساتذہ تنظیموں کے قائدین نے کی۔

مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے  ٹی ایس اے یوای ٹی کے صدر ڈاکٹر امجد حسین نے کہا کہ ہمارا پنجاب حکومت سے مطالبہ ہے کہ انجینئرز کی طرح  بنیادی تنخواہ سے 1.5 گنا زیادہ ٹیکنیکل / انجینئرنگ الاؤنس یونیورسٹیوں میں خدمات انجام دینے والے انجینئرز اساتذہ کو بھی دیا جائے،ہمارے ساتھ امتیازی سلوک کیوں کیا جارہاہے؟یوای ٹی پاکستان کاواحد ادارہ ہےجو سب سےزیادہ انجینئرز پیدا کرتاہے،پوری دنیا میں یوای ٹی کے گریجوایٹس خدمات انجام دے رہے ہیں،اس کے باوجود یوای ٹی سے سوتیلا سلوک کیا جارہا ہے،حکومت نے سی اینڈ ڈبلیو، آبپاشی، پبلک ہیلتھ انجینئرنگ اور لوکل گورنمنٹ کے محکموں میں کام کرنے والے انجینئرز ٹیکنیکل الاؤنس دیاہے،اسی طرح  زراعت، مواصلات اور معاشرتی ترقی، کانوں / معدنیات اور منصوبہ بندی  کے شعبوں کو بھی دیا گیا۔

سرکاری یونیورسٹیوں اور کالجز میں کام کرنے والے انجینئرزاساتذہ  اس حق کے لئے احتجاج کر رہے ہیں لیکن انھیں ابھی تک ٹیکنیکل الاؤنس نہیں دیا گیا ہے،یونیورسٹیوں میں پروفیسرز، لیکچررز، لیب انجینئر کی حیثیت سے خدمات سرانجام دینے والے انجینئرز وہی ہیں جو مستقبل کے انجینئر تیار کرتے ہیں، تاہم بدقسمتی سے حکومتوں کی طرف سے انہیں مستقل نظرانداز کیا جاتا رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اب وقت آگیا ہے کہ اس طرح کے امتیازی سلوک کو روکا جائے اور سرکاری یونیورسٹیوں میں کام کرنے والے انجینئرز کی خدمات کے لئے تسلیم کیا جانا چاہئے اور ٹیکنیکل الاؤنس اسی شرح سے دیا جانا چاہئے جس طرح دیگر محکموں میں کام کرنے والے انجینئرز کو دیا گیا ہے۔انہوں نے پنجاب حکومت کے ذمہ یوای ٹی کے واجب الاداء ایک ارب روپے کی بھی واپسی کا مطالبہ کیا جو رچنا کالج گوجرانوالہ اور ایم این ایس ملتان کی مد میں خرچ کیے گئے۔

ٹی ایس اے نے اعلان کیا کہ اگر ہمارے مطالبات منظور نہ کئے گئے تو احتجاج کا دائرہ وسیع ہو جائے گا۔ یوای ٹی کے اساتذہ نے اپنے مطالبات پورے ہونے تک یوای ٹی کی انتظامی کمیٹیوں کے بائیکاٹ کا اعلان کیا  ہے اور آج سے ساتذہ سیاہ پٹیاں باند ھیں گے۔ ٹی ایس اے نے کہا کہ اگر ہمارے مطالبات منظور نہ ہوئے تو ہم اگلے مرحلے میں وزیر اعلی ہاؤس کا گھیراؤ کریں گے۔مظاہرے میں خواتین اساتذہ بھی شریک تھیں، شرکاء نے کتبے اور بینرز اٹھا رکھے تھے جن پر مطالبات کے حق میں نعرے درج تھے۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -