ماتحت عدالتوں اور وکلاء کی سکیورٹی فول پروف بنائی جائے: وکلاء رہنماء 

ماتحت عدالتوں اور وکلاء کی سکیورٹی فول پروف بنائی جائے: وکلاء رہنماء 

  

لاہور(رپورٹ:کامران مغل)سیشن کورٹ میں کے داخلی اور خارجی راستوں پر مامور پولیس اہلکاروں کی جانب سے سیکورٹی کے انتہائی ناقص انتظامات کے پیش نظرججوں،عدالتی عملے،وکلاء اورسائلین کی زندگیاں داؤ پر لگ گئیں،یادرہے کہ سیشن کورٹ سمیت دیگرماتحت عدالتوں میں پہلے بھی ملزموں اور پولیس اہلکاروں سمیت متعدد فراد کے قتل اورزخمی ہونے جیسے واقعات رونما ہوچکے ہیں۔تفصیلات کے مطابق سیشن عدالت میں روزانہ ہزاروں کی تعداد میں وکلاء اورسائلین مقدمات کی سماعت کیلئے پیش ہوتے ہیں، اس موقع پر جیلوں سے لائے گئے ملزمان کوبھی عدالتوں میں پیش کیاجاتاہے تاہم ملزمان سے ملاقات کیلئے ان کے متعدد رشتہ دار بھی سیشن عدالت میں پہنچ جاتے ہیں، عدالت میں سیکیورٹی انتہائی ناقص ہونے کی وجہ سے ہزاروں وکلاء کیساتھ ساتھ روزانہ سیکڑوں کی تعداد میں پیشی پرآئے ملزمان اوران سے ملاقات کیلئے آنے والے رشتہ داروں کی زندگیاں داؤ پر لگی رہتی ہیں،اس کے ساتھ ساتھ عدالتوں میں آنے والے ججز، عدالتی عملے کی زندگیاں بھی خطرے سے خالی نہیں،وکلاء سابق سیکرٹری لاہور بار کامران بشیر مغل،میاں داؤد، رفیق احمد بھٹی،مدثر چودھری،مشفق احمد خان اورمرزاحسیب اسامہ اورمجتبیٰ چودھری نے روزنامہ پاکستان سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ سیشن عدالت کی سیکیورٹی پر تعینات اکثر پولیس اہلکار اپنی ڈیوٹی سرانجام دینے کی بجائے خوش گپیوں میں مصروف رہتے ہیں جس کے باعث روزانہ مقدمات کی سماعت کیلئے آنے والے ہزاروں سائلین اور وکلاء اپنی سیکیورٹی کیلئے پریشان رہتے ہیں،اس لئے وہ پولیس کی موجودہ ناقص سیکیورٹی اور چیکنگ کے انتظام کو غیر تسلی بخش سمجھتے ہیں،پولیس کی نفری سیشن کورٹ کے باہر اور اندر تعینات کی گئی ہے ان میں سے متعدد کے پاس عوام الناس کو چیک کرنے والے آلات بھی پورے نہیں ہیں تاہم سیکیورٹی پر مامور اہلکار بھی اپنی ڈیوٹی صحیح معنوں میں ادا نہیں کررہے ہیں جس کے باعث اکثر اوقات سیشن کورٹ میں آنے والے سائلین کی بغیر تلاشی ہی اندر داخل ہو جاتے ہیں،اسی وجہ سے پہلے بھی قتل وغارت کے واقعات رونما ہوچکے ہیں اور اب بھی ناقص سیکیورٹی کے باعث کوئی بھی ممکنہ بڑا سانحہ رونما ہوسکتا ہے،انہوں نے مزید کہا کہ اکثر اوقات پولیس اہلکار عدالت میں آنیوالے افراد کو چیک کرنے میں سستی اور کوتاہی برتتے ہیں،سیشن کورٹ کی سیکیورٹی کے بارے میں اعلی افسران کو بھی نوٹس لینا چاہے،وکلاء نے مطالبہ کیا ہے کہ ماتحت عدالتوں اوروکلاء کی سیکیورٹی فول پروف بنائی جائے۔

وکلاء سیکیورٹی 

مزید :

صفحہ آخر -