میٹرو بس منصوبہ میں مبینہ کرپشن گواہ پیش نہ ہونے پر سماعت ملتوی

میٹرو بس منصوبہ میں مبینہ کرپشن گواہ پیش نہ ہونے پر سماعت ملتوی

  

ملتان (خصو صی  رپورٹر)احتساب عدالت ملتان نے میٹرو بس (بقیہ نمبر21صفحہ6پر)

منصوبہ میں مبینہ طور پر کرپشن کرنے کے ریفرنس میں سابق چیف انجینئر ایم ڈی اے سمیت 15 سرکاری افسران اور 7 کنٹریکٹرز کے خلاف کیس میں 11 ملزمان وسیم احمد، خالد پرویز، نذیر چغتائی، ریاض حسین، جاوید اقبال، منظور احمد، مسعود خان، صابر سدوزئی، امانت علی، منعم سعید اور شاہد نجم کی بریت کی درخواستوں جبکہ ٹرائل کیس میں کوئی گواہ پیش نہ ہونے پر سماعت وکیل کی استدعا پر 19 جولائی تک ملتوی کرنے کا حکم دیا ہے۔ اس موقع پر وکیل نے کہا کہ مجوزہ قانون میں تبدیلی ہورہی ہے اس لیے پیشی دی جائے۔ مقدمہ میں دو چینی باشندوں کو عدالت نے اشتہاری قرار دیا ہوا ہے۔20 ملزمان میں سابق پراجیکٹ ڈائریکٹر صابر خان صدوزئی، نذیر احمد چغتائی، خالد پرویز، شاہد نجم، امانت علی،منعم سعید، ریاض حسین، منظور احمد، جاوید اقبال،  رانا وسیم،محمد مسعود خان، سیف اللہ آبڑو، محمد خان، سلمان خان، ظہیر خان، محمد عبدالقادر، محمد زاہد ندیم، سید مسعود حسین، عامر لطیف اور شاہد سلیم شامل ہیں،  ملزمان کے خلاف 6 اپریل 2019 کو ریفرنس عدالت میں دائر کیا گیا،ملزمان کے خلاف ایک ارب 53 کروڑ 30 لاکھ سے زائد کی کرپشن کا الزام ہے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -