جھوٹ پر مبنی مقدمات کو پروموٹ کرنا افسوسناک،ہیومن رائٹس موومنٹ

 جھوٹ پر مبنی مقدمات کو پروموٹ کرنا افسوسناک،ہیومن رائٹس موومنٹ

  

لاہور(پ ر) انٹرنیشنل ہیومن رائٹس موومنٹ کے مرکزی چیئرمین محمدناصراقبال خان نے کہاہے کہ بدقسمتی سے معاشرے میں جھوٹ پر مبنی مقدمات کو پروموٹ کیا جارہا ہے، بوگس مقدمات اورپولیس اہلکاروں کے ہاتھوں دانستہ ناانصافی کے واقعات عام ہیں۔ اگرہمارا ریاستی نظام ناکارہ اور ناکام نہ ہوتا توقدم قدم پرسچائی کو ر سو ا ئی اور پسپائی کاسامنا نہ کرنا پڑتا۔ شر پسند عنا صر پولیس سمیت مختلف محکمہ جات کے بدعنوان اہلکاروں کی ملی بھگت سے اپنے مذموم مفادات کیلئے کسی بھی سلجھے ہوئے انسان کومقدمات میں الجھاسکتے ہیں 

۔رنجش اورعداوت کی بنیاد پر درخواست گزار کسی کوبھی بلیک میل کرسکتے ہیں۔

لیکن ان کاجھوٹ آشکار ہونے کے باوجود انہیں سزا نہیں ملتی۔اسلام آباد سمیت دوسرے شہروں میں جھوٹ پرمبنی مقدمات کااندراج ہمارے ہاں رواج بن گیا ہے۔اسلام آباد پولیس میں پروفیشنل ازم کے فقدان نے انتظامی بحران پیداکردیا،ریاست مداخلت کرے۔ اسلام آباد پولیس کے تھانیدارچند کوڑیوں کیلئے اسلامی روایات اور انصاف کوروندرہے ہیں، ان کامحاسبہ ناگزیر ہے۔اسلام آباد پولیس حکام کی مجرمانہ چشم پوشی نے ان کے محکمہ کی کالی" بھیڑوں " کوآدم خور"بھیڑیوں " میں تبدیل کردیا۔وہ انٹرنیشنل ہیومن رائٹس موومنٹ کے مرکزی سینئر وائس چیئرمین مخدوم وسیم قریشی ایڈووکیٹ کی قیادت میں قانون دانوں کی طرف سے اپنے اعزاز میں ایک استقبالیہ سے خطاب کررہے تھے۔ محمدسعیدطاہرسلہری ایڈووکیٹ،میاں شہزاد حسن وٹوایڈووکیٹ،ناصرعباس چوہان ایڈووکیٹ،میاں محمداشرف عاصمی ایڈووکیٹ،محمدمدثر چوہدری ایڈووکیٹ،ہادی سرور بھٹی ایڈووکیٹ،عدنان حسین ایڈووکیٹ،فرخ منہاس ایڈووکیٹ اورشہزاد عمران ایڈووکیٹ سمیت متعدد سینئر قانون دان استقبالیہ میں شریک تھے۔محمدناصراقبال خان نے مزید کہا کہ جھوٹ اوربدنیتی بے نقاب ہونے کے باوجودمقدمات کوفوری خارج نہ کرنا اوران کے مدعیان کوکسی قسم کی سزا نہ ملنا ایک المیہ ہے۔زیادہ ترسینئر پولیس آفیسرزکرپشن کے نتیجہ میں درج ہونیوالے مقدمات میں ملزمان کوانصاف کی فراہمی کیلئے سچائی تک رسائی یقینی نہیں بناتے۔ آفیسرز کی عدم دلچسپی کے نتیجہ میں نناوے فیصد تھانیدار فرعون بنے ہوئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اگراسلام آباد پولیس میں کرپشن اوراختیارات سے تجاوزکادوردورہ ہے توپھریقینا دوسرے شہروں میں صورتحال یقینا اس سے بھی بدتر ہوگی۔کوئی حکومت پولیس کلچر کی تبدیلی کاوعدہ وفا اورخواب شرمندہ تعبیر کرنے کیلئے تیار نہیں ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -