سندھ حکومت بلدیاتی الیکشن ملتوی کرنے کی فضا بنارہی ہے، حافظ نعیم

    سندھ حکومت بلدیاتی الیکشن ملتوی کرنے کی فضا بنارہی ہے، حافظ نعیم

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمان نے الیکشن کمیشن پر الزام عائد کیا ہے کہ بلدیاتی امیدواروں کو وجہ بتائے بغیر کاغذات نامزدگی مسترد کیے جارہے ہیں، لوگوں کے پاس اپیل کا کوئی حق نہیں،الیکشن کمیشن پر سندھ حکومت کی چھاپ لگی ہوئی ہے، سندھ حکومت جان بوجھ کر ایسی فضا بنا رہی ہے کہ الیکشن ملتوی ہوجائے۔ادارہ نورحق میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمان نے کہا کہ سندھ میں بلدیاتی الیکشن کا عمل بدترین صورتحال سے دوچار ہے،بلدیاتی امیدواروں کو وجہ بتائے بغیر کاغذات نامزدگی مسترد کیے جارہے ہیں جبکہ لسٹوں میں نام تک موجود نہیں ہے اور وجہ بھی نہیں بتا رہے، اسکروٹنی کروانے کے باوجود غیر حاضر شو کیا جا رہا ہے۔انہوں نے کہاکہ ووٹر لسٹیں ہمیں کیوں نہیں دی جارہی، ووٹر لسٹیں الیکشن کمیشن کی ذمہ داری ہیں، تماشا یہ ہے کہ اس وقت دو دو ووٹر لسٹیں چل رہی ہیں۔شہریوں کو حتمی اور غیر حتمی میں الجھا رکھا ہے، ایسا لگ رہا ہے الیکشن کمیشن یہ کام جان بوجھ کر حکومت کے ساتھ مل کر کررہا ہے۔نتخابات کی غیر شفافیت کو ختم کیا جائے۔انہوں نے سندھ حکومت پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ آر اوز کی صورت میں پارٹی ورکرز بیٹھا دیئے گئے ہیں، جو چاہتے ہی نہیں کراچی میں با اختیار شہری حکومت آئے، سوائے جماعت اسلامی کے ساری پارٹیاں مل کر بلدیاتی انتخابات سے فرار چاہتی ہیں۔انہوں نے کہاکہ ایم کیو ایم حکومت کے ساتھ ملکر کراچی کا بیڑہ غرق کرتی رہی ہے۔انہوں نے کہاکہ ایم کیو ایم نے ہمارا حق چھینا اور شب خون مارا، ایم کیو ایم نے الیکشن کی آڑ میں کرپشن کا بازار گرم کیا ہوا ہے۔ یہاں پچاس پچاس کروڑ میں ایم پی ایز بِک رہے ہیں کراچی بک رہا ہے، ہم خاموش نہیں رہ سکتے، ہمارا مطالبہ ہے فوری بلدیاتی انتخابات کروائے جائیں، ہم با اختیار بلدیاتی نظام چاہتے ہیں۔انہوں نے کہاکہ بتایا جائے پولیس، رینجرز اور قانون نافذ کرنے والے ادارے ایک ضمنی انتخاب کنٹرول نہیں کرسکے تو پورا بلدیاتی انتخابات کیسے کنٹرول کریں گے۔حافظ نعیم الرحمان نے کہا کہ لانڈھی کے ضمنی انتخاب میں کھلے عام گولیاں چل رہی تھیں اور رینجرز کو وہاں نہیں بھیجا گیا۔سندھ حکومت کی ہدایت پر یہ سب کچھ ہو رہا ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -