ٹی ایم اے ڈیرہ کے ملازمین 3ماہ کی تنخواہوں اور دو ماہ کی پنشن سے محروم

ٹی ایم اے ڈیرہ کے ملازمین 3ماہ کی تنخواہوں اور دو ماہ کی پنشن سے محروم

  

ڈیر ہ اسماعیل خان(بیورو رپورٹ)سیاسی کھابوں نے صوبے کی کماؤ ٹی ایم اے ڈیرہ کو دیوالیہ بنادیا، صوبائی وزیر بلدیات اپنی آبائی ٹی ایم کے حالات سدھارنے میں ناکام، ٹی ایم اے ڈیرہ کے ملازمین 3ماہ کی تنخواہوں اور دو ماہ کی پنشن سے محروم، تنخواہوں اور پنشن کی عدم عدم ادائیگی کیخلاف ملازمین کا احتجاج و دفاتر کی تالہ بندی، جہاز(کچہری) چوک تک علامتی احتجاجی ریلی،ایڈوانس بلنگ بند کرنے کا مطالبہ، بروز جمعرات 23جون تک تنخواہیں نہ ملنے پر توپانوالہ چوک پر احتجاجی کیمپ لگانے اعلان۔ تفصیلات کے مطابق خیبر پختونخوا کی صوبائی دارالحکومت پشاور کے بعد صوبے کی دوسری بڑی اور کماؤ ٹی ایم اے ڈیرہ بے جا سیاسی مداخلت اور سیاسی چہیتوں کی فوج ظفر موج کی عیاشیوں کی بدولت دیوالیہ ہوچکی ہے۔ سالہا سال سے کرپشن کی خبروں کی گردش میں رہنے والی ٹی ایم اے ڈیرہ کی معاشی بدحالی کے حوالے سے ملازمین کو امید تھی کی ڈیرہ سے تعلق رکھنے والے رکن صوبائی اسمبلی کے صوبائی وزیر بلدیات بننے سے معاشی مسائل میں کمی آئے گی تاہم صوبائی وزارت بھی ٹی ایم اے ڈیرہ کی معاشی بدحالی میں کوئی بہتری نہ لاسکی اور صوبائی حکومت سے گرانٹ کے انتظار میں ملازمین3ماہ کی تنخواہوں کی راہ تک رہے ہیں۔ گزشتہ دنوں ٹی ایم اے ڈیرہ سٹاف انصاف یونین نے احتجاجا دفاتر کی تالہ بندی کی تھی جس پر صوبائی وزیر و سٹی میئر تحصیل ڈیرہ کے فوکل پرسن نے چند روز میں تنخواہوں اور پنشن ادائیگی کی یقین دہانی کرائی تھی تاہم گزشتہ روز تک تنخواہیں نہ ملنے پر ٹی ایم اے ڈیرہ سٹاف انصاف یونین کے صدررفیق چشتی، قیصر کامران، محمد تنویر، اور باقر کی قیادت میں ملازمین نے دفاتر کی تالہ بندی کرکے ٹی ایم اے آفس سے جہاز(کچہری) چوک تک علامتی احتجاجی ریلی نکالی اور 24گھنٹے کا الٹی میٹم دیتے ہوئے بروز جمعرات23جون تک تنخواہوں کی ادائیگی نہ ہونے پر توپانوالہ چوک پر احتجاجی کیمپ لگانے اور آئندہ کا لائحہ عمل ترتیب دینے کا اعلان کیا۔ ٹی ایم اے یونین عہدیداروں نے مطالبہ کیا کہ ٹی ایم اے ڈیرہ میں سیاسی نوازشات کیلئے ایڈوانس بلنگ فی الفور بند کی جائے اور سب سے پہلے پنشن و تنخواہوں کی ادائیگی اور مستقبل میں تنخواہوں کی ادئیگی کو ریگولر بنایا جائے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -