رمیز راجہ نے اپنی زندگی کا ایک ”حیران کن‘‘ واقعہ سنادیا

رمیز راجہ نے اپنی زندگی کا ایک ”حیران کن‘‘ واقعہ سنادیا
رمیز راجہ نے اپنی زندگی کا ایک ”حیران کن‘‘ واقعہ سنادیا

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) معروف پاکستانی کمنٹیٹراور سابق کرکٹر رمیز راجہ نے ضیاء الحق کے دورا کا ایک ناقابل یقین واقعہ سناتے ہوئے اسے اپنی زندگی کا یادگار لمحہ قرار دیا ہے۔ 

 رمیز راجہ نے اس وقت کا ایک واقعہ سنایا جب پاکستان میں سابق صدر اور فوجی حکمران ضیاء الحق کا مارشل لاء تھا۔ وہ گوجرانوالہ میں چار روزہ فرسٹ کلاس کرکٹ میچ کھیل رہے تھے۔انہوں نے بتایا کہ شروع میں سٹیڈیم خالی تھا لیکن اچانک 10 ہزار لوگ داخل ہوگئے۔ ان کے ساتھ کچھ پولیس والے بھی وہاں پہنچے اور انہیں ایک افسر نے بلوا کر کہا کہ وہ پچ سے وکٹیں ہٹائے۔جب رمیز راجہ نے پوچھا کہ ایسا کیوں ہو رہا ہے تو انہیں بتایا گیا کہ سزا کے طور پر کسی کو کوڑے مارے جائیں گے۔

رمیز نے کہا، ’اس کے بعد، ایک قیدی کو لایا گیا، اور ایک شخص نے حارث رؤف کی طرح بھاگتے ہوئے قیدی پر کوڑے برسائے۔ قیدی نے پھر ہجوم کی طرف اس طرح ہاتھ ہلایا جیسے وہ کوئی ہیرو ہو۔ اس کے فوراً بعد، سب اسٹیڈیم سے نکل گئے، اور کھیل دوبارہ شروع ہوگیا‘۔

مزید :

کھیل -