سوشل میڈیا پر بے جا تنقید، کرونا وائرس پر ریسرچ ہی روک دی گئی

  سوشل میڈیا پر بے جا تنقید، کرونا وائرس پر ریسرچ ہی روک دی گئی

  



کراچی(آئی این پی)سندھ میں صوبائی حکومت کی جانب سے کیے گئے لاک ڈاؤن کے سبب جامعہ کراچی میں قائم سائنسی تحقیق کا عالمی شہرت یافتہ ادارہ آئی سی سی بی ایس (انٹرنیشنل سینٹر فار کیمیکل اینڈ بائیو لوجیکل سائنسز) بھی بند کر دیا گیا جس کے سبب اس ادارے میں کروانا وائرس سے متاثرہ مریضوں کی دوا کی تیاری بھی روک دی گئی ہے۔کرونا دوا کی تیاری کا عمل اس ماہ کے آغاز میں ہی شروع کیا گیا تھا اور اس دوا کی تیاری پر تجربات آئی سی سی بی ایس کے ماتحت ادارے پنجوائی سینٹر فار ڈرگ ریسرچ میں کئے جارہے تھے۔دوا کی تیاری میں مصروف پاکستانی سائنسدانوں نے دوا کی تیاری کے 5 مختلف مراحل میں سے پہلا مرحلہ مکمل کرتے ہوئے ایک بڑی پیش رفت کی تھی اور 9 ایسے عناصر کی شناخت کرلی گئی تھی جو کرونا وائرس کے host cell میں تحریک کو روکنے یا اسے توڑنے میں موثر ثابت ہورہے تھے۔آئی سی سی بی ایس کے سربراہ اور معروف سائنسدان پروفیسر ڈاکٹر اقبال چوہدری نے ریسرچ کے رک جانے کی میڈیا کو تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ کچھ اساتذہ نے ہمارے سائنسدانوں کے گھروں سے ہماری ہی شٹل سروس میں ادارے تک آنے کی تصاویر اور وڈیوز سوشل میڈیا پر آپ لوڈ کی جس کے سبب ایک بحث چھڑ گئی اور ہمارے لیے ریسرچ کو جاری رکھنا مشکل ہوگیا جس کے بعد تحقیقی سرگرمیوں کو روک کر ادارے کو بند کرنا پڑا۔

ریسرچ

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر