حج سے متعلقہ کوئی خبر بغیر تصدیق کے نہ چلائی جائے،سوشل میڈیا بھی احتیاط کرے:جمیل الرحمٰن

حج سے متعلقہ کوئی خبر بغیر تصدیق کے نہ چلائی جائے،سوشل میڈیا بھی احتیاط ...

  



لاہور (انٹرویو،میاں اشفاق انجم)وزارت مذہبی امور کے ترجمان اور آئی ٹی کے انچارج جمیل الرحمن نے ”روزنا مہ پاکستان“سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہا حج کے حوالے سے بغیر تصدیق کے کوئی خبر نہ چلائی جائے۔سوشل میڈ یابھی احتیاط کرے۔وفاقی وزیر مذہبی امور کی ہدایت پر حج 2020ء کی تیاریاں جاری ہیں سرکاری حج سکیم کی قرعہ اندازی میں کامیاب ہونیوالے عازمین اپنے پاسپورٹ جمع نہ کرائیں،سعودی وزارت بائیو میٹرک کے حوالے سے مشاورت مکمل ہوتے ہی پاسپورٹ جمع کرانے کی تاریخ دیں گے۔البتہ میڈیکل سرٹیفکیٹ 27مارچ تک متعلقہ بنکو ں میں جمع کرانا ضروری ہے۔انہوں نے کہا حج آپریشن2020ء انشاء اللہ 23،24جون،یکم ذوالقعد کو شروع ہونے جارہا ہے۔ائیر لائنز سے حج کرایہ کم کرانے سمیت دیگر امور طے کیے جارہے ہیں کرایہ کم ہوا تو فائد ہ حاجی کو دیں گے۔اس سال بڑے شہروں سے حاجی 40کلو وزن لاسکیں گے چھوٹے شہروں جہا ں چھوٹے جہاز ہوں گے وہاں 30کلو وزن کی اجازت ہوگی۔نان رجسٹر ڈ اور سب ایجنٹ کے حوالے سے حج بکنگ کا مسئلہ قابل توجہ ہے کسی انرول کمپنی نان رجسٹرڈ اور سب ایجنٹ کو بکنگ کی اجازت نہیں ہے صرف کوٹہ ہولڈر حج2020ء کی بکنگ کرسکتے ہیں ان کی فہرست وزارت مذہبی امور کی ویب سائٹ www.hajjinfo.org پر دستیاب ہے۔ترجما ن نے بتایا بکنگ کرنے والا غلط ہے یا درست اس کے لیے ہم نے ایپ متعارف کردی ہے آپ جس کمپنی کا ڈیٹا چیک کرنا چاہتے ہیں اس کا انرول منٹ نمبر لکھ کر8331 پر SMS بھیج دیں آپ کو 30سیکنڈ میں کمپنی کی تفصیل مل جائے گی۔جمیل الرحمن نے بتایا کرونا وائرس کے حوالے سے ہم نے حکومتی اقدامات پر عمل درآمد کرتے ہوئے ملک بھر میں 25مارچ سے شروع ہونے والے تربیتی پروگرام ملتوی کر دیئے ہیں 5اپریل کو نیا شیڈول دیں گے۔اگر کسی وجہ سے 5اپریل کو بھی آغاز نہ ہوسکا تو رمضان کے بعد تربیتی پروگرامات کو یقینی بنائیں گے انہوں نے کہا حج آپریشن شروع ہونے کے بعد مکہ مدینہ میں عازمین حج کی تربیت کیلئے بلڈنگزمیں پروگرام ترتیب دے رہے ہیں یہ سلسلہ منیٰ،عرفات میں بھی جاری رکھیں گے، ترجما ن وزارت مذہبی امور نے بتایا سعودی حکومت اگر کوٹہ کم یا زیادہ کرتی ہے تقسیم کا فیصلہ وزارت کرے گی۔سرکاری سکیم کے ایک لاکھ 7ہزار افراد کو کامیابی کے خطوط لکھے جاچکے ہیں ان کا جانا تو ضروری ہے۔

جمیل الرحمن

مزید : علاقائی