یوم پاکستان آج سادگی اور کرونا کیخلاف جنگ کے عزم کیساتھ منایا جائیگا

یوم پاکستان آج سادگی اور کرونا کیخلاف جنگ کے عزم کیساتھ منایا جائیگا

  



لاہور، اسلام آباد، کراچی(نیوزایجنسیاں) کرونا وائرس کی وبا ء پھوٹنے کی وجہ سے قوم آج(پیر) 23مارچ کو یوم پاکستان سادگی اور اس وبا ء کے خلاف جنگ کے عزم کے ساتھ منائے گی۔احتیاطی اقدامات کے طور پر ہر قسم کے عوامی اجتماعات بالخصوص فوجی پریڈ منسوخ کردی گئی ہے۔تاہم ریڈیو پاکستان اور پاکستان ٹیلی ویژن خصوصی پروگرام نشر کریں گے جبکہ اخبارات اس موقع پر خصوصی ضمیمے شائع کریں گے۔یہ دن 1940 میں اسی روز قرارداد لاہور منظور کئے جانے کی یاد میں منایا جاتا ہے۔ اس روز برصغیر کے مسلمانوں نے علیحدہ وطن کے حصول کے ایجنڈے کا عزم کیا تھا۔ صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے یوم پاکستان پر بانی رہنماؤں کو خراج عقیدت اور مقبوضہ کشمیر کے عوام کے ساتھ غیر متزلزل حمایت کا اعلان کرتے ہوئے کہاہے کہ پاکستان ان کے جائز حق خودارادیت کے لئے اخلاقی، سیاسی اور سفارتی حمایت جاری رکھے گا۔ صدر نے یوم پاکستان کے موقع پر اپنے پیغام میں کہاکہ وہ جموں و کشمیر کی عوام کو یقین دلاتے ہیں کہ پاکستان ان کے ساتھ کندھے سے کندھا ملا کر کھڑا ہو گا اور ان کے جائز حق خودارادیت کے لئے اخلاقی، سیاسی اور سفارتی حمایت جاری رکھے گا۔ 23مارچ ہماری قومی تاریخ کا اہم سنگ میل ہے کیونکہ آج کے دن 1940ء میں تاریخی قرارداد لاہور پاس کی گئی جس نے برصغیر کے مسلمانوں کو ایک عظیم مقصد کے لئے متحد کیا۔ برصغیر کے مسلمانوں نے متحد ہو کر علیحدہ وطن کے لئے غیرمتزلزل عزم ظاہر کیا جس میں وہ اپنے مذہب، روایات، اقدار اور ثقافت کے مطابق اپنی زندگی گزار سکیں۔وزیراعظم عمران خان نے اپنے پیغام میں کہا کہ پاکستانی قوم کسی بھی مصیبت اور مشکل کا مقابلہ کرنے کی صلاحیت رکھتی ہے،رواں سال یوم پاکستان مناتے ہوئے ہمیں اپنی صفوں میں اتحاد، نظم و ضبط اور جذبے کی ضرورت ہے تاکہ ہم اس آفت کا مقابلہ کرسکیں جس نے پوری دنیا کو اپنی لپیٹ میں لے رکھا ہے۔ انہوں نے کہاکہ قیام پاکستان کی بدولت بروصغیر پاک و ہند کے مسلمانوں کو اپنے تہذیبی تشخص کو پروان چڑھانے، مذہبی آزادی اور ترقی کے مساوی حقوق میسر ہوئے جو متحدہ ہندوستان کی ہندو اکثریت نے ان سے سلب کرنے پر تلی تھی۔ گزشتہ ستر سال سے لیکر آج تک کے حالات و واقعات ہمارے آباؤ اجداد کے وژن اور سوچ کی وسعت و صداقت کی گواہی دیتے ہیں۔چیئرمین سینیٹ محمد صادق سنجرانی اور ڈپٹی چیئر مین سلیم مانڈی والا نے اپنے پیغام میں کہا کہ 23مارچ تاریخی اعتبار سے ہمارے لیے انتہائی اہمیت کا حامل دن ہے، اس دن ہمارے آبا اجداد نے قائد اعظم محمد علی جناح کی زیر قیادت مسائل کا ملکر سامنا کرنے اور اپنی تقدیر بدلنے کاعہد کیا تھا جو کہ بعد میں تعمیر پاکستان پر منتج ہوا۔آج کا دن بھی وہی تاریخی اہمیت رکھتا ہے کیونکہ آج ہمیں بحیثیت قوم باقی جن مسائل کا سامنا ہے وہاں کرونا کی عالمی شکل اختیار کرنے والی وبا نے ہماری سماجی زندگیوں اور معاشی سرگرمیوں کو بری طرح متاثر کیا ہے۔ یہ وقت ایک سنجیدہ لائحہ عمل اختیار کرنے کا ہے۔ حکومت جہاں اپنی ذمہ داریاں پوری کر رہی ہے وہاں عوام پر بھی بھاری ذمہ داری عائد ہوتی ہے۔ ہمیں ملکر اس مسلے کا سامنا کرنا ہوگا۔اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے کہا کہ ملک کو تعمیر و ترقی اور خوشحالی کی راہ پر گامزن کرنے کیلئے ملک کو درپیش سنگین چیلنجز سے نکالنا ہو گا۔ اس مقصد کے حصول کے لیے پوری قوم کو یکجا ہو کر مشترکہ حکمت عملی کو اپنانے کی ضرورت ہے، ملک کو اس وقت جس عالمی وبا نے اپنی لپیٹ میں لے رکھا ہے اس سے نمٹنے کے لیے ہمیں 23 مارچ 1940 والے جذبے اور کوششوں کی ضرورت ہے۔ وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار اور وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان نے کہا ہے کہ یوم پاکستان پر شہری گھروں میں رہیں کیونکہ آج پاکستان ہم سے سماجی فاصلے قائم رکھنے کا تقاضا کررہا ہے۔بحیثیت قوم ہم نے پاکستان کے موجودہ چیلنج کو سمجھتے ہوئے ذمہ داری کا ثبوت دینا ہے۔جس جذبے کیساتھ 23مارچ 1940ء کو قرارداد پاکستان منظورہوئی،اسی عزم کیساتھ پاکستانی قوم کوروناوائرس کوہرائے گی۔کرونا وائرس سے بچاؤ کی جنگ ہم سب کی مشترکہ جنگ ہے۔ جس طرح برصغیر پاک و ہند کے مسلمانوں نے کامیاب جدوجہد کر کے الگ وطن حاصل کیا،اسی طرح یہ قوم ملکر موذی مرض کو شکست دے گی۔مسلم لیگ (ن)کے صدر اور قائد حزب اختلاف شہبازشریف،پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ آج کا دن یاد دلاتا ہے کہ پاکستانی ہر خواب کی تعبیر حاصل کرنے کی صلاحیت اور عزم رکھتے ہیں قائداعظم محمد علی جناح، علامہ اقبال اور مشاہیر پاکستان، شہدائے پاکستان کو خراج عقیدت پیش کرتے ہیں قیام پاکستان کی جدوجہد میں عظیم قربانیاں دینے والے تمام گمنام شہیدوں، غازیوں کو سلام پیش کرتے ہیں جدوجہد پاکستان میں حالات وواقعات کے جبر کی بھینٹ چڑھ جانے والی ماوں، بہنوں، بیٹیوں کو بھول نہیں سکتے آج ہم تاریخ کے ایک اور دوراہے پر کھڑے ہیں آج ہمیں ایک بار پھر تحریک پاکستان جیسے جذبے، واضح سوچ اور عمل کی ضرورت ہے کورونا کی صورتحال متقاضی ہے کہ آج ہم تحریک پاکستان کے جذبے کا مظاہرہ کریں کورونا کی وجہ سے اس سال یوم پاکستان نہیں منارہے انشااللہ کورونا پر قابو پانے کے بعد آئندہ سال اور بھی زیادہ جوش وجذبے سے یہ دن منائیں گے۔

یوم پاکستان

مزید : صفحہ اول