وزیر اعظم کا خطاب قوم کو تقسیم اور مایوسی پھیلانے کے مترادف تھا:بلاول

وزیر اعظم کا خطاب قوم کو تقسیم اور مایوسی پھیلانے کے مترادف تھا:بلاول

  



کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے وزیراعظم عمران خان کے قوم سے خطاب کے ردعمل میں کہا ہے کہ کرونا وبا کے مشکل ترین حالات میں بھی وزیراعظم نے مایوسی پھیلائی۔ طالبان کے خلاف جنگ ہو یا کرونا وائرس سے لڑائی عمران خان نے ہمیشہ قوم کو تقسیم کیا لیکن ہمیں ہر صورت عوام کی جانوں کا تحفظ کرنا ہے۔ وزیراعظم نے قوم سے خطاب میں کہا کہ آج ہماری صورتحال اٹلی کی طرح نہیں ہے، اگر ہم کچھ نہیں کریں گے تو ویسی ہی صوتحال بن جائے گی اور وہ اچھا صحت کا نظام ہونے کے باوجود برداشت نہیں کرسکے تو ہم کیسے کریں گے؟ وفاقی حکومت سے اپیل ہی کرسکتا ہوں کہ جلد ایکشن لینا ہوگا۔ 18 ماہ میں لاکھوں لوگوں کو بیروزگار کرنے والے حاکم کو اب غریب یاد آئے ہیں؟ روزگار بچانے کے نام پر لوگوں کو موت کے منہ میں نہیں دھکیلا جا سکتا، بہانے بنانے کے بجائے وزیراعظم قومی وسائل غریبوں پر خرچ کیوں نہیں کرتے؟ اگر اب بھی قومی وسائل اور خزانہ عوام پر خرچ نہیں ہوگا تو کب ہوگا؟بلاول بھٹو زرداری نے سندھ حکومت کے لاک ڈاؤن کے فیصلے کو بھی سراہا اور عوام سے اپیل کی کہ لاک ڈاؤن کے دوران عوام گھروں پر رہیں۔دریں اثناء پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے ملک کی سیاسی قیادت پر زور دیا ہے کہ انہیں اسی عزم و حوصلے کی پیروی کرنی چاہئے، جس کا مظاہرہ ہمارے بزرگوں نے 80 برس قبل 23 مارچ 1940 کو قرارداد پاکستان کو منظور کرتے ہوئے کیا تھا، یوم پاکستان کی مناسبت سے جاری اپنے پیغام میں بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ ہماری قوم آج کا دن ایسے حالات میں منا رہی ہے جب پوری دنیا ایک بڑے خطرے سے دوچار ہے اور جس نے کرونا وائرس کی وباء کی شکل میں ہمارے ملک کو بھی متاثر کیا ہے۔ ہمیں اس وقت ایک ملک گیر لاک ڈاؤن کے ساتھ قومی اتحاد اور ذمہ داری کا مظاہرہ کرتے ہوئے دیگر حفاظتی اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے تاکہ ہم اپنے لوگوں کو بچا سکیں۔ قراردادِ پاکستان ہمیں بنیادی رہنما اصول فراہم کرتی ہے، جن پر عمل پیرا ہوکر ہم اپنی قوم کو انسانی حقوق کے احترام، مساوات، امن اور خوشحالی کی بلندیوں پر لے جا سکتے ہیں۔ پی پی پی چیئرمین نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ نظریہ پاکستان کے ساتھ ساتھ آٹھ دہائیاں قبل منظور کی گئی قراردادِ پاکستان کی حقیقی علمبردار ہونے کے حیثیت میں ان کی جماعت بابائے قوم قائداعظم محمد علی جناح، شہید ذوالفقار علی بھٹو اور شہید محترمہ بینظیر بھٹو کے خوابوں کو تعبیر دینے کی خاطر ہر ناانصافی اور ظلم و جبر کے خلاف جدوجہد جاری رکھے گی۔علاوہ ازیں بلاول بھٹو زرداری نے بیگم نصرت بھٹو کو ان کے23مارچ کو91 ویں یوم پیدائش پر شاندار الفاظ میں خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ بیگم نصرت بھٹو نے آمر ضیاء اور اس کی جابر مشینری کے خلاف بہادری سے مقابلہ کیا اور ایم آر ڈی و جمہوریت کی بحالی کی تحریک کی سربراہی کی۔ بیگم نصرت بھٹو نے اس جدوجہد میں بے پناہ قربانیاں دیں۔ جمہوریت اور عوام کے حقوق کے اس جدوجہد کے دوران انہوں اپنے خاوند، دو بیٹوں شہید شاہنواز بھٹو اور شہید میر مرتضیٰ بھٹو اور بیٹی شہید محترمہ بینظیر بھٹو کو کھویا۔ پیپلز پارٹی کی قیادت و کارکن ہمیشہ بیگم نصرت بھٹو کو یاد رکھیں گے۔

بلاول

مزید : صفحہ اول