فضائی حدود کی بندش، دوحہ میں پھنسے پاکستانیوں کیلئے خوشخبری آگئی، نوٹم جاری 

فضائی حدود کی بندش، دوحہ میں پھنسے پاکستانیوں کیلئے خوشخبری آگئی، نوٹم ...
فضائی حدود کی بندش، دوحہ میں پھنسے پاکستانیوں کیلئے خوشخبری آگئی، نوٹم جاری 

  



لاہو ر(ڈیلی پاکستان آن لائن ) فضائی حدود کی بندش کی وجہ سے مختلف ممالک سے آکر دوحہ ایئرپورٹ پر پھنس جانے والے پاکستانیوں اور ان کے اہلخانہ کے لیے خوشخبری آگئی ہے کہ سول ایوی ایشن نے قطر ایئرلائنز کو  پاکستان آمد کی ون ٹائم اجازت دیدی ہے اور اس سلسلے میں نوٹم بھی جاری کردیاگیا۔

تفصیلات کے مطابق فضائی حدود کی اچانک بندش کی وجہ سے مختلف ممالک سے آنیوالے پاکستانی دوحہ ایئرپورٹ پر پھنس کر رہ گئے تھے، پاکستان کی فضائی حدود کی بندش کی وجہ سے پروازیں بھی منسوخ ہوگئی تھیں، ان مسافروں کا مسئلہ روزنامہ پاکستان سمیت کئی میڈیا ہائوسز نے اٹھایا اور بالآخر انتظامیہ حرکت میں آگئی ۔ اب سول ایوی ایشن نے ایئرپورٹ جیسے پرہجوم مقام پر پھنسے پاکستانیوں کو وطن پہنچانے کے لیے قطر ایئرلائن کو اجازت مل گئی ہے ۔ 

یاد رہے کہ گزشتہ روز  ایک خاتون نے روزنامہ پاکستان کو بتایاکہ ان کی فیملی کینیڈا سے قطر ایئرویز کی پرواز سے پاکستان آرہی تھی لیکن گزشتہ شام سے ہی وہ دوحہ ایئرپورٹ پر پھنسے ہیں اور تاحال حکام کی طرف سے ان کو پاکستان لانے کیلئے کوئی انتظام نہیں کیا جا سکا، نہ ہی ایئرپورٹ پر موجود کوئی بات سننے کو تیار نہیں۔ ایک خاتون جس کی فیملی بھی ایئرپورٹ پر  پھنسی ہوئی ہے ، نے بتایا کہ بارہ گھنٹے سے زائد ہوچکے ہیں، مسافر تھکے ہوئے ہیں اور ایئرپورٹ پرآرام کرنے کی بھی جگہ نہیں۔ ان کاکہناتھاکہ تاحال تمام مسافر تندرست ہیں لیکن ایئرپورٹ جیسی جگہ پر رہنے سے ان کے بھی بیمار ہونے یا وائرس سے متاثر ہونے کا خطرہ ہے ، وہاں پھنسے ہوئے مسافروں میں کینیڈا، ترکی ،آسٹریلیا، برطانیہ، ملائیشیا اور افریقہ سے آئے لوگ شامل ہیں، بیشتر پروازیں محو سفر تھیں جب حکومت پاکستان نے فضائی آپریشن معطل کرنے کا اعلان کردیا، جب مسافر دوحہ پہنچے تو انہیں اطلاع ملی کہ پاکستان کے مختلف شہروں میں جانیوالی ان کی پروازیں منسوخ ہوچکی ہیں۔ وہاں پھنسے مسافروں نے حکومت پاکستان سے اپیل کی ہے کہ انہیں وہاں سے نکالاجائے، پاکستان میں کسی بھی جگہ پر رکھیں لیکن ایئرپورٹ سے ان کو نکالنے میں مدد کی جائے ۔ مختلف ممالک سے دوحہ ایئرپورٹ پہنچ کر پھنس جانیوالے پاکستانیوں کی ویڈیوز سوشل میڈیا پر بھی وائرل ہو گئیں۔

ایک مسافر نے بتایا کہ کل رات سے ہم یہاں ہیں، کوئی طریقہ بتائیں، تاکہ یہاں سے نکل کر اپنے ملک میں پہنچ سکیں۔ ایک خاتون نے بتایاکہ بیس مارچ کی صبح کو اس نے سفر شروع کیا، دوپروازیں لے کر دوحہ پہنچیں جہاں پھنس کر رہ گئیں، خواتین اور بچے بھی ہیں، پھنسے مسافروں کی تعداد تقریباً 50 ہے ، گزشتہ روز 80 مسافرتھے جن میں سے کچھ لوگوں کو زبردستی واپس بھیج دیاگیا، انہیں بھی واپس جانے کو کہا جارہا ہے لیکن ان کے پاس پاکستانی پاسپورٹ ہے اور وہ پاکستان ہی آنا چاہتی ہیں، اب پولیس بلانے کی دھمکی دی جارہی ہے۔مسافروں نے حکومت سے اپیل کی کہ انہیں اتنے سنگین حالات میں وہاں سے نکالا جائے، اگر آپریشن معطل ہی کرنا تھا تو پہلے بتاتے ، تاکہ وہ اپنے ٹھکانوں سے روانہ ہی نہ ہوتے، وہ بیچ راستے کچھ کرنہیں سکتے، نہ ہی ایئرپورٹ کے ٹرانزٹ سے باہر جاسکتے ہیں، یہاں حکام کہہ رہے ہیں کہ چوبیس گھنٹے سے زائد ایئرپورٹ پر نہیں رک سکتے۔

ایک اور ویڈیو میں وہاں پھنسے شہریوں نے بتایا کہ آپ نے کوئی پروسیجر نہیں اپنایا،اچانک آپریشن معطل کردیا۔ ایک صاحب نے بتایا کہ ایئرپورٹ حکام نے انہیں آپشن دیا ہے کہ آپ کو پڑوسی ممالک  افغانستان، ایران ، چین یا انڈیا میں اتار دیتے ہیں، تو حکام کو بتایا کہ چھوٹے بچے ساتھ ہیں، ہم کہیں نہیں جاسکتے تو جواب دیا گیا کہ چوبیس گھنٹے سے زائد کسی کو ایئرپورٹ پر رکھنے کی پالیسی ہی نہیں ہے، اگر آپ کو اپنی  حکومت ہی قبول نہیں کررہی تو ہم کیا کرسکتے ہیں ۔

ایک اور ویڈیو میں دیکھا جاسکتاہے کہ ایئرپورٹ کے لائونج میں خواتین اور چھوٹے بچے بھی موجود ہیں۔یادرہے کہ گزشتہ روز چیئرمین این ڈی ایم اے نے اعلان کیا تھا کہ ہفتہ کی شام آٹھ بجے سے  دوہفتے کے لیے یعنی چار اپریل شام آٹھ بجے تک  تمام انٹرنیشنل پروازیں بند کررہے ہیں، وہ پاکستان نہیں آسکیں گی اور آپریشن معطل رہے گا۔ 

مزید : قومی