کچھوے کی اہمیت، تحفظ کے حوالے سے شعوراجاگر کرنیکا آج عالمی دن

  کچھوے کی اہمیت، تحفظ کے حوالے سے شعوراجاگر کرنیکا آج عالمی دن

  

کوٹ ادو(تحصیل رپورٹر)پاکستان سمیت دنیا بھر میں کچھوے کی اہمیت اور اس کے تحفظ کے حوالے سے شعور اجاگر کرنے کا عالمی دن آج منایا جائے گا،کچھوا زمین پر پائے(بقیہ نمبر17صفحہ6پر)

جانے والے سب سے قدیم ترین رینگنے والے جانداروں میں سے ایک ہے، یہ اس زمین پر آج سے لگ بھگ 21 کروڑ سال قبل وجود میں آیا تھا،اس کی اوسط عمر بھی بہت طویل ہوتی ہے، عام طور پر ایک کچھوے کی عمر 30 سے 50 سال تک ہوسکتی ہے، بعض کچھوے 100 سال کی عمر بھی پاتے ہیں،اس دن کو منانے کا آغاز امریکن ٹرٹل ریسکیو نامی ایک تنظیم نے 2000میں کیا۔اس دن کا مقصد بحیثیت اشرف المخلوق بیس کروڑسال پرانی خدائی مخلوق کو ہلاکت سے بچاناہے۔ ماہرین کے خیال میں کچھوے کی نسل آئندہ پچاس سال میں مکمل طور پر ختم ہوجائے گی کیونکہ کچھوؤں کے ایک لاکھ بچوں میں سے صرف ایک ہی کچھوا اپنی بالغ عمر تک پہنچ پاتا ہے اور دوسرے سی فوڈ کی صنعت میں فروغ، پالتو جانوروں کی تجارت، سمندر میں محفوظ ٹھکانوں میں تیزی سے کمی اور سمندری آلودگی کی وجہ سے کچھوے کی نسل تیزی سے معدوم ہورہی ہے،پاکستان میں کراچی کے ساحل کچھوؤں کی افزائش اورخوراک کی فراہمی کے لئے دنیا میں موزوں ترین سمجھے جاتے ہیں جس پر صوبہ سندھ میں کچھوؤں کو پچانے کے لیے آج سے40 سال پہلے قانون بنایاجا چکا ہے مگر اس پر عمل درآمد نہ ہونے کے برابر ہے,چنانچہ یہاں ڈبلیو ڈبلیو ایف کے اشتراک سے کچھوے کی افزائش نسل کے لئے کام کیا جا رہا ہے اور کچھوؤں کی 7 میں سے 2 قسمیں گرین اوراولیو ریڈلی کی نسل بڑھانے کے لیے خاص اقدامات کیے جا رہے ہیں۔

عالمی دن

مزید :

ملتان صفحہ آخر -