طیارہ حادثہ لیکن کراچی روانگی سے قبل بدقسمت طیارہ کس عرب ملک سے لوٹا تھا؟ پتہ چل گیا

طیارہ حادثہ لیکن کراچی روانگی سے قبل بدقسمت طیارہ کس عرب ملک سے لوٹا تھا؟ پتہ ...
طیارہ حادثہ لیکن کراچی روانگی سے قبل بدقسمت طیارہ کس عرب ملک سے لوٹا تھا؟ پتہ چل گیا

  

اسلام آباد(ویب ڈیسک) پی آئی اے کا کراچی میں حادثے کا شکار ہونے والے طیارے ائیر بس 320 میں عملے سمیت 108 مسافروں کی گنجائش تھی مگر بتایا گیا کہ کورونا کے حفاظتی اقدامات کی وجہ سے کم مسافروں کو طیارے میں بیٹھایا گیا ، یہ طیارہ ایک روز قبل ہی مسقط سے لاہور پہنچا تھا۔

روزنامہ جنگ کے مطابق کئی کچھ مسافر اس طیارے میں بڑی کوششوں کے باوجود سوار نہ ہو سکے اور وہ موت کے منہ میں جانے سے بچ گئے۔ مذ کورہ بد قسمت طیارہ مسقط سے پاکستانیوں کو لے کر جمعرات کے روز لاہور پہنچا تھا جس کے بعد اس کی مکمل چیکنگ کی گئی اور گرائونڈ انجینئرنے فٹنس کا سرٹیفکیٹ دیا اور پائلٹ مکمل چیکنگ کے بعد لاہور سے کراچی کے لیے روانہ ہوا۔ذرائع کا کہنا ہے کہ طیارے کو اڑانے والے پائلٹ کافی تجربہ کار اور سینئر تھے، یہ تاثر غلط ہے کہ طیارے میں کوئی خرابی تھی ، اگرپہلے سے کوئی خرابی ہوتی تو پائلٹ نہ اڑاتے، ویسے بھی طیارہ خراب حالت میں کیسے پونے دو گھنٹے پرواز کرکے لاہور سے کراچی پہنچا گیا تھا۔ 

مزید :

قومی -