طیارہ حادثے میں گھروں میں کام کرنیوالی تین لڑکیاں بھی زخمی لیکن یہ اب کہاں اور کس حال میں ہیں؟ تفصیلات سامنے آگئیں

طیارہ حادثے میں گھروں میں کام کرنیوالی تین لڑکیاں بھی زخمی لیکن یہ اب کہاں ...
طیارہ حادثے میں گھروں میں کام کرنیوالی تین لڑکیاں بھی زخمی لیکن یہ اب کہاں اور کس حال میں ہیں؟ تفصیلات سامنے آگئیں

  

کراچی(ویب ڈیسک) گزشتہ روز ماڈل کالونی میں پیش آنے والے حادثے میں گھروں میں کام کرنے والی تین ملازمہ بھی شدید جھلس گئیں۔ جیو نیوز کے مطابق کراچی کے علاقے ماڈل کالونی میں طیارہ گرنے سے تباہ ہونے والے گھروں میں کام کرنے والی تین گھریلو ملازم لڑکیاں بھی شدید جھلس گئیں جو ہسپتال میں زیر علاج ہیں اور 2 کی حالت تشویشناک بتائی جاتی ہے۔

چینل ذرائع کے مطابق شاہ لطیف ٹاو¿ن تھانے کی حدود ملیر جام کھنڈو گوٹھ کے خاصخیلی محلے سے تعلق رکھنے والی نازیہ دختر قادر بخش خاصخیلی، عزیزہ دختر اللہ ورایو خاصخیلی اور ماریہ دختر خمیسو خاصخیلی ماڈل کالونی کے ان گھروں جزوقتی کام کرنے والی ملازمائیں ہیں جن پر پی آئی اے کا طیارہ گر کر تباہ ہوا۔ طیارہ گرتے ہی ماڈل کالونی کے کئی گھروں کو بھی آگ لگ گئی تھی جس کے نتیجے میں اس آبادی کے کافی لوگ زخمی ہوئے ان میں یہ تینوں گھریلو ملازمائیں بھی شامل ہیں۔ ان کے رہائشی علاقے جام کھنڈوگوٹھ کی سوشل ورکر رشیدہ نے بتایا کہ تینوں لڑکیاں دیگر خواتین کے ساتھ گھروں میں کام کرنے کے لیے گوٹھ سے صبح سویرے جاتی اور شام کو واپس لوٹ آتی تھیں۔

انہوں نے بتایا کہ گزشتہ روز 2 بجے دو لڑکیوں نے کام ختم کر لیا تھا اور وہ گلی میں چارپائی پر بیٹھ کر تیسری لڑکی کا انتظار کر رہی تھیں کہ طیارہ آگرا۔ رشیدہ کے مطابق تینوں لڑکیوں کو فوری طور پر دیگر زخمیوں کے ساتھ جناح اسپتال لے جایا گیا تھا جہاں سے انہیں سول اسپتال کے برنس سینٹر منتقل کردیا گیا۔ ڈاکٹرز کے مطابق دو لڑکیاں بری طرح جھلسی ہوئی ہیں اور ان کی حالت انتہائی تشویشناک ہے۔

مزید :

علاقائی -سندھ -کراچی -