”رن وے پر لینڈنگ کے بعد دوبارہ ٹیک آف کیوں کیا“طیارے کے حادثے کی تحقیقات میں نیا سوال اٹھ گیا

”رن وے پر لینڈنگ کے بعد دوبارہ ٹیک آف کیوں کیا“طیارے کے حادثے کی تحقیقات میں ...
”رن وے پر لینڈنگ کے بعد دوبارہ ٹیک آف کیوں کیا“طیارے کے حادثے کی تحقیقات میں نیا سوال اٹھ گیا

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن ) پاکستان انٹرنیشنل ائیرلائنز کے طیارے کو ہونے والا حادثہ غفلت تھی یا کسی غلطی کا نتیجہ تحقیقات جاری ہیں۔سول ایوی ایشن کے ذرائع نے طیارے کے رن وے کو چھونے کی تصدیق کردی، طیارے نے دن 2 بجکر 20 منٹ پر پہیے کھلے بغیر رن وے پر لینڈ کیا، پھر پائلٹ نے دوبارہ ٹیک آف کرلیا۔دوبارہ ٹیک آف کا حکم کس نے دیا اس کی تحقیقات کپتان کی کنٹرول ٹاور سے ہونے والی بات چیت کی بنیاد پر کی جارہی ہے۔

عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ کریش لینڈنگ سے رن وے پر کافی چنگاریاں بھی اٹھیں، ذرائع کے مطابق ممکن ہے کہ رن وے پر لینڈنگ کی کوشش کے دوران ہی جہاز کے انجن کو نقصان پہنچا ہو۔اس سے پہلے حادثے میں بچ جانےوالے مسافر محمد زبیر نے بھی بتایاتھا کہ جہاز تھوڑا سا رن وے پر چلا پھر پائلٹ نے جہاز اوپر اڑا لیا، 10 سے 15 منٹ جہاز اوپر ہی رہا پھر پائلٹ نے دوبارہ لینڈنگ کی کوشش کی لیکن دو سے تین منٹ بعد طیارہ کریش کرگیا۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز قومی ائیرلائن پی آئی اے کی پرواز کو پیش آنے والے حادثے کے نتیجے میں جاں بحق افراد کی تعداد 97 ہوگئی جب کہ صرف 2 مسافر معجزانہ طور پر محفوظ رہے۔لاہور سے کراچی آنے والی قومی ائیرلائن کی پروازپی کے 8303 ائیرپورٹ کے قریب آبادی پر گر کر تباہ ہوگئی جس میں 91 مسافر اور عملے کے 8ارکان سوار تھے۔

مزید :

قومی -