ہانگ کانگ کے معاملات میں بیرونی مداخلت کے خلاف ہم ۔۔۔چین نے دوٹوک اعلان کردیا

ہانگ کانگ کے معاملات میں بیرونی مداخلت کے خلاف ہم ۔۔۔چین نے دوٹوک اعلان ...
ہانگ کانگ کے معاملات میں بیرونی مداخلت کے خلاف ہم ۔۔۔چین نے دوٹوک اعلان کردیا

  

بیجنگ (ڈیلی پاکستان آن لائن)چینی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ چینی حکومت قومی خودمختاری، سلامتی اور ترقیاتی مفادات کے تحفظ اور ہانگ کانگ کے معاملات میں بیرونی مداخلت کی مخالفت کے لئے پرعزم ہے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق ترجمان نے یہ بیان نیشنل پیپلز کانگریس (این پی سی) کے ہانگ کانگ سے متعلق ایجنڈے پر ایک پریس کیا۔ ترجمان نے بتایا کہ سٹیٹ کونسل کے ہانگ کانگ اور مکا امور کے دفتر کے ترجمان اور ہانگ کانگ خصوصی انتظامی علاقہ (ایچ کے ایس اے آر) کی مرکزی عوامی حکومت کے رابطہ دفتر کے ترجمان، دونوں نے ایچ کے ایس اے آر میں قومی سلامتی کے تحفظ کے لئے قانونی فریم ورک اور نفاذ کا طریقہ کار کے قیام اور بہتری کے مسودہ فیصلے پر بیانات جاری کیے، جسے تیرہویں نیشنل پیپلز کانگریس کےتیسرے سیشن میں غور و خوض کے لئے پیش کیا گیا۔ترجمان نے کہا کہ قومی سلامتی کسی قوم کے وجود اور ترقی کی بنیادی پیشگی شرط ہے جو کسی بھی قوم کے بنیادی مفادات سے متعلقہ ہے۔

ترجمان نے کہا کہ تاہم حقیقت یہ ہے کہ سنہ 2019 میں ترمیمی بل سے لے جانے والے انتشار سے ہانگ کانگ کی آزادی اور بنیاد پرست علیحدگی پسند قوتیں دہشت گردی کی متشدد سرگرمیوں میں اضافہ کے ساتھ تیزی آئی ہے۔ترجمان نے کہا کہ غیر ملکی مداخلت کی قوتوں اور"'تائیوان کی آزادی" کی فورسز نے ہانگ کانگ کے امور میں شدید مداخلت کی ہے، جو ہانگ کانگ کی عوامی سلامتی کو مجروح،"ایک ملک، دو نظام"کے اصول کے لئے سنجیدہ چیلنج اور قومی سلامتی کے لئے حقیقی خطرہ بن گئے ہیں۔ترجمان نے کہا کہ تمام ممالک میں چاہے وہ اکائی پر مشتمل ہوں یا وفاقی طرز کے ہوں قومی سلامتی سے متعلق امور پر صرف ریاستی مقننہ کے پاس قانون سازی کا اختیار ہوتا ہے اور یہ کہ قومی سلامتی کے تحفظ کی بنیادی اور حتمی ذمہ داری چین کی مرکزی حکومت پر عائد ہوتی ہے۔

ترجمان نے کہا کہ قومی سلامتی کا تحفظ "ایک ملک، دو نظام" اور اس کے وجود کی بنیاد ہے، قومی سلامتی کو یقینی بنانے سے ہی ہانگ کانگ میں خوشحالی اور استحکام آسکتا ہے۔ترجمان نے کہا کہ "ایک ملک، دو نظام" چین کی بنیادی ریاستی پالیسی ہے، اور چینی حکومت اس پر عمل درآمد کے لئے پرعزم ہے اور یہ کہ ہانگ کانگ چین کا ایک خصوصی انتظامی علاقہ ہے جو براہ راست چینی مرکزی عوامی حکومت کے ماتحت ہے۔ترجمان نے کہا کہ قومی سلامتی کے تحفظ کے لئے ایچ کے ایس اے آر کے لئے قانون سازی خالص طور پر چین کا داخلی معاملہ ہے اور کسی بھی دوسرے ملک کو مداخلت کا حق حاصل نہیں۔

مزید :

بین الاقوامی -