بشکیک: زخمی طالبعلم کواسحاق ڈارکیسے وطن لائے؟

بشکیک: زخمی طالبعلم کواسحاق ڈارکیسے وطن لائے؟
بشکیک: زخمی طالبعلم کواسحاق ڈارکیسے وطن لائے؟

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


بشکیک (ڈیلی پاکستان آن لائن )کرغزستان کے دارالحکومت میں غیرملکیوں پرکئے گئے حملوں سے انتہائی زخمی پاکستانی طالبعلم کی غیرمعمولی طور پر وطن واپسی ممکن بنالی گئی ہے۔
بشکیک میں کرغزبلوائیوں کے حملے سے بڑی تعداد میں ایشیائی طالبعلم اور روزگار سے وابستہ افراد زخمی ہوئے تھے، ان میں تین پاکستانی طالبعلم بھی تھے جن میں سے ایک کی حالت زیادہ خراب تھی۔نائب وزیراعظم اور وزیرخارجہ سینیٹر اسحاق ڈار شنگھائی تعاون تنظیم کے اجلاس میں شرکت کےلئے قازقستان کے دارالحکومت آستانہ میں تھے جہاں سے ان کی کرغز وزیرخارجہ کلوبایف ڑین بیک مولدوکانووچ سے ملاقات ہوئی تھی۔اسحاق ڈار کرغز وزیرخارجہ کے ساتھ ہی آستانہ سے مختصر دورے پر کرغزستان کے دارلحکومت بشکیک گئے جہاں انہوں نے حکام سے ملاقات کرکے پاکستانی طلبہ اور دیگر افراد سے متعلق معلومات حاصل کیں۔وطن واپسی پر اس نمائندے سے ٹیلی فون پر بات کرتے ہوئے نائب وزیراعظم نے بتایا کہ حکام نے یقین دہانی کرائی ہے کہ پاکستانیوں کی جان ومال کی حفاظت یقینی بنائی جائےگی اور حملہ کرنیوالوں کو انصاف کے کٹہرے میں لایا جائےگا۔سینیٹر اسحاق ڈار نے بتایا کہ حملوں میں پاکستانیوں کے جاں بحق ہونے کی افواہیں بے بنیاد ہیں، تین پاکستانی زخمی ہوئے تھے جن میں سے ایک کی حالت تشویشناک تھی۔
وزیرخارجہ نے بتایا کہ اس زخمی طالبعلم کا اصرار تھا کہ اسے ہر صورت واپس وطن پہنچایا جائے تاہم اسکی سفری دستاویزات فوری طور پر دستیاب نہیں تھیں۔ اس کا حل امیگریشن کے لئے خصوصی انتظامات ممکن بناکر نکالا گیا۔وزیرخارجہ نے بتایا کہ وہ زخمی طالبعلم کی خواہش پر اسے اپنے ساتھ ہی طیارے میں اسلام آباد لے آئے ہیں تاکہ یہاں بہترعلاج ومعالجہ ہو اور طالبعلم کے عزیزو اقارب کی پریشانی بھی دور ہو۔

مزید :

قومی -