معاشی ترقی کیلئے فنی تعلیم کی اہمیت کو انکار نہیں کیا جاسکتا‘ عرفان علی

معاشی ترقی کیلئے فنی تعلیم کی اہمیت کو انکار نہیں کیا جاسکتا‘ عرفان علی

  

لاہور( کامرس رپورٹر) پاکستان کی معاشی ترقی اور غربت کے خاتمے کیلئے ٹیکنیکل ایجوکیشن اینڈ ووکیشنل ٹریننگ کی اہمیت کو انکار نہیں کیا جاسکتا۔ ان خیالات کا اظہار چیئر پرسن ٹیوٹا عرفان علی نے گزشتہ روز(جمعہ) کو جرمن انٹرنیشنل کوآپریشن (GIZ) کے تعاون سے جرمن پاکستان ٹریننگ انیشی ایٹو(GPATI) سے متعلق منعقدہ ایک آگہی سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ سیمینار میں جی آئی زیڈ کی ٹیکنیکل ایڈوائزر ڈاکٹر اتے ہوفمن، چیف آپریٹنگ آفیسر جواد احمد قریشی ، لوکل اور بین الاقوامی کمپنیوں کے سربراہان کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔چیئر پرسن ٹیوٹا عرفان علی نے کہا کہ جرمن پاکستان ٹریننگ انیشی ایٹو(GPATI) پروگرام میں دوہری ٹریننگ ( یعنی کلاس روم میں پڑھائی اور صنعتی ادارے میں جا کر عملی تربیت) شامل ہے جو پوری دنیا میں فنی تربیت کا ایک قابل بھروسہ ماڈل ہے۔اس ٹریننگ پروگرام کا آغاز صوبہ پنجاب میں ٹیوٹا کی جانب سے فنی تعلیم کے فروغ کیلئے کئے جانے والے اقدامات کیلئے سنگ میل ثابت ہوگا۔جپاتی ٹریننگ پروگرام کے تحت ٹیوٹا کے اداروں میں ٹیکنکل اینڈ کمرشل کورسز شروع کئے جا رہے ہیں جس سے انڈسٹری کو عالمی معیار کی ماہر افرادی قوت دستیاب ہوگی جو حکومت پنجاب کے پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ (پی پی پی) کی پالیسی کی عکاسی ہے۔ٹیوٹا نے وزیر اعلی پنجاب کے وژن کے مطابق جپاتی ٹریننگ پروگرام کے کامیاب آغاز کیلئے اپنے اداروں کی ورکشاپس میں جدید آلات بھی فراہم کردئے ہیں۔ چیف آپریٹنگ آفیسر ٹیوٹا جواد احمد قریشی نے سمینار کے شرکاءکو بتایا کہ جپاتی ٹریننگ پروگرام کے تحت ٹیوٹاکی45 لوکل اور ملٹی نیشنل کمپنیوں کے ساتھ پارٹنر شپ صوبہ پنجاب میںروزگار کی فراہمی کرنے کیلئے بے حد فائدہ مند ثابت ہوگی ۔پہلے مرحلہ میں منتخب اداروں میں موٹر وہیکل ٹیکنیشن، ویلڈر، الیکٹریکل اور مشینسٹ کورسز لڑکوں کیلئے جبکہ کسٹمرسروس آفیسر اور سیلز آفس/اسٹنٹ کورسز لڑکیوں کیلئے شروع کئے جائیں گے۔ماسٹر ٹرینرزاور اساتذہ کو کورسز کے مطابق ٹریننگ فراہم کی جارہی ہے۔ باقاعدہ کلاسز کا آغاز جنوری 2014میں ہوگا۔ ٹریننگ پروگرام کے تحت پارٹنر کمپنیاں ٹیوٹا اداروں کے طلباءو طالبات کو آن جاب ٹریننگ کے دوران تین ہزار روپے ماہانہ وظیفہ بھی دیں گی۔اس پروگرام کے کامیاب آغاز کے بعد اسے صوبہ پنجاب کے دوسرے صنعتی شہروں فیصل آباد، سیالکوٹ ، گو جرانوالہ اور ملتان میں بھی جلد شروع کیاجائے گا۔

سمینار سے خطاب کرتے ہوئے جی آئی زیڈ کی ٹیکنیکل ایڈوائز ڈاکٹراتے ہوفمن نے کہا کہ ٹیوٹا اداروں میں جپاتی پروگرام کا آغازصوبہ پنجاب میںفنی تعلیم کے فروغ کے ساتھ ساتھ بیروزگاری کے خاتمے میں بھی فائند مند ہوگا۔اس پروگرام کے تحت لوکل اور ملٹی نیشنل کمپنیوں کو ماہر نوجوان افرادی قوت کی دستیابی بھی ہوگی۔ہم نے اس پروگرام کو وزیر اعلی پنجاب کی خواہش پر صوبہ پنجاب میں بھی شروع کیا ہے تاکہ پاکستان کی نوجوان نسل کو نہ صرف پاکستان بلکہ پوری دنیا میں روزگار کے مواقع آسانی سے دستیاب ہوں۔

مزید :

کامرس -