لاہور چیمبر کاڈائریکٹر جنرل انٹیلی جنس اینڈ انویسٹی گیشن ان لینڈ ریونیو کو صوابدیدی اختیارات دینے پر گہری تشویش کا اظہار

لاہور چیمبر کاڈائریکٹر جنرل انٹیلی جنس اینڈ انویسٹی گیشن ان لینڈ ریونیو کو ...

  

لاہور(کامرس رپورٹر) لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری نے ڈائریکٹر جنرل انٹیلی جنس اینڈ انویسٹی گیشن ان لینڈ ریونیو کو انکم ٹیکس آرڈیننس 2001ءکے سیکشن 111اور 122کے تحت صوابدیدی اختیارات دینے پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے اسے کاروباری ماحول خراب کرنے اور کاروباری برادری کو دوبارہ پرانے ٹیکس نظام میں دھکیلنے کی کوشش قرار دیا ہے۔ ایک بیان میں لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر انجینئر سہیل لاشاری نے کہا کہ ٹیکس اہلکاروں کو مزید اختیارات دینے کی کوئی ضرورت نہیں کیونکہ بہت سے چیلنجز کے باوجود محاصل کے اہداف پورے ہورہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ فیڈرل بورڈ آف ریونیو کے اہلکاروں کو صوابدیدی اختیارات دینے سے ٹیکس دہندگان کی حوصلہ شکنی ہوگی۔

 اور کرپشن کا سیلاب آجائے گا جس سے ٹیکس نیٹ میں وسعت خواب بن کر رہ جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ کاروباری نظام میں ٹیکس حکام کی مداخلت بڑھنے سے کاغذی کاروائیاں بڑھ جائیں گی اور تاجروں کے لیے شدید مسائل پیدا ہونگے جس کی وجہ سے اپنے ذہنی یکسوئی سے نہیں کرپائیں گے۔ لاہور چیمبر کے صدر نے کہا کہ ملک کے وسیع ترمفاد میں یہ ضروری ہے کہ حکومت تاجروں کو سہولیات دے اور ٹیکس اہلکاروں کی چیرہ دستیوں سے محفوظ رکھے ۔ انہوں نے کہا یوں نظرآتا ہے کہ فیڈرل بورڈ آف ریونیو موجودہ حکومت کی ساکھ خراب کرنا چاہتا ہے جو نجی شعبے کو سہولیات دینے کے لیے ہر ممکن اقدامات اٹھارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے اپنے حالیہ دورہ لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے موقع پر تاجر برادری کو فری ہینڈ دینے کا وعدہ کیا تھا لیکن ایف بی آر اس کے اُلٹ اقدامات اٹھارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر ٹیکس اہلکاروں کے صوابدیدی اختیارات میں بلاوجہ اضافہ کردیا گیا تو اس سے کاروباری سرگرمیاں فروغ پانا ممکن نہیں رہے گا، تاجر برادری توانائی کے بحران اور زیادہ پیداواری لاگت کی وجہ سے پہلے ہی پریشان ہے لہذا ایسے اُلٹ اقدامات اٹھانے سے گریز کیا جائے۔

مزید :

کامرس -