اجتماع عام میں ”عورتوں کے استحصال کا خاتمہ اور حقوق کی ادائیگی“ کے موضوع پرکانفرنس کا انعقاد

اجتماع عام میں ”عورتوں کے استحصال کا خاتمہ اور حقوق کی ادائیگی“ کے موضوع ...

  

لاہور (سٹاف رپورٹر)جماعت اسلامی کے زیر اہتمام مینار پاکستان کے سائے تلے اجتماع عام خواتین کانفرنس کے سیشن میں قرار داد بعنوان ”عورتوں کے استحصال کا خاتمہ اور حقوق کی ادائیگی“ منظور کی گئی جس میں کہا گیا ہے کہ مملکت خداد پاکستان کا قیام اسلام کی بنیاد پر عمل میں لایا گیا۔ مسلمانان ہند اوربانیان پاکستان نے اس وقت خالق کائنات سے یہ وعدہ کیا تھا کہ ہم اس خطہ زمین کو اسلام کی عملی تجربہ گاہ بنائیں گے اور شریعت محمدی نافذ کریں گے۔قیام پاکستان کی تحریک میںجہاں مردوں نے اپنا خون پسینہ شامل کیا وہیں خواتین بھی اس جدوجہد میں اپنے بزرگوں، جوانوں اور بیٹوںکے شانہ بشانہ رہیں اور لازوال قربانیاں رقم کیں۔ فاطمہ جناں اور بیگم رعنا لیاقت علی سمیت مسلم اکثرےتی علاقوں کے ہر گھر کی ہر خواتین کی جدوجہد اور قربانیاں لازوال اور قابل فخر ہیں۔اسلامیان ہند کے پرخلوص جذبوں اور بے مثال قربانیوں کے عوض خدائے مہربان نے ہمیں وطن عزیز پاکستان تو عطا کردیا مگر بدقسمتی سے آج نصف صدی سے زائد کا عرصہ گزر جانے کے بعد بھی ہم اپنے رب سے کئے گئے وعدے کوعملی جامہ پہنانے سے قاصر ہیں۔ دین فطرت ،اسلام نے خواتین کو جو حقوق اور مراتب تفویض کیے ہیں اس سے ہر ذی شعور واقف ہے، اسلام سے قبل عورت تحت الثریٰ تھی ، اسلام نے اسے اوج ثریا عطا کیا، عورت کو معاشرے میں ایک عفت مآب اور عزت دار مقام دیا‘ بہترین حقوق دیے اورہرقسم کے صنفی امتیاز سے بالا تر کر کے اسے اللہ کے قائم کردہ حدود کے اندر رہتے ہوئے اعلیٰ تعلیم اور بہترین ذمہ داریوں کی ادائیگی سمیت تمام تر آزادی عطا کی۔ مگر آج اس روئے زمین پر بنت حوا کی حالت زار ناقابل بیان ہے۔

کانفرنس

مزید :

صفحہ آخر -