جے آئی ٹی کا ڈائریکٹر منہاج القرآن کو بیان دینے کیلئے حتمی نوٹس ارسال

جے آئی ٹی کا ڈائریکٹر منہاج القرآن کو بیان دینے کیلئے حتمی نوٹس ارسال

  

                    لاہور( این این آئی) سانحہ ماڈل ٹاﺅن کی تحقیقات کرنےوالی جوائنٹ انوسٹی گیشن ٹیم نے مقدمے کے مدعی ڈائریکٹر منہاج القرآن جواد حامد کو بیان قلمبند کرانے کیلئے تیسرا اور حتمی نوٹس ارسال کردیا ، بیان قلمبند نہ کرائے جانے کی صورت میں جے آئی ٹی اپنی تحقیقات مکمل کرلے گی ۔ذرائع کے حوالے سے بتایا گیا ہے کہ سانحہ ماڈل ٹاﺅن کی تحقیقات کےلئے سی سی پی اوکوئٹہ عبد الرزاق چیمہ کی سربراہی میں بنائی گئی جوائنٹ انوسٹی گیشن ٹیم کا اجلاس گذشتہ روز بھی منعقد ہوا۔ نوٹس کے باوجود مقدمے کے مدعی ڈائریکٹر منہاج القران جواد حامد پیش نہ ہوئے ۔ جے آئی ٹی نے جواد احامد کو سانحے کے حوالے سے اپنا بیان قلمبند کرانے کے لئے تیسرا اور آخری نوٹس جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر منہاج القرآن کا نمائدہ پیش نہ ہوا تو اپنی تحقیقات مکمل کریں گے ۔ جے آئی ٹی کی طرف سے دوبارہ یہ پیشکش بھی کی گئی ہے کہ اگر منہاج القرآن کا نمائندہ خود حاضر نہیں ہونا چاہتا تو ٹیلیفون پر بیان قلمبند کرا یا جا سکتاہے۔ دوسری طرف عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہر القادری نے گزشتہ روز پریس کانفرنس میں اسکی تصدیق کی ہے کہ جے آئی ٹی کی طرف سے نوٹسز بھجوائے گئے ہیں لیکن ہم یکطرفہ طور پر بننے والی جے آئی ٹی کو تسلیم نہیں کرتے اور شہداءکے ورثاءاور ہمارا کوئی نمائندہ تحقیقاتی ٹیم کے سامنے پیش نہیں ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ میری پریس کانفرنس کو باضابطہ اعلان سمجھا جائے۔

جے آئی ٹی اجلاس

مزید :

صفحہ آخر -