مڈغاسکر میں طاعون کی وباءسے 40 افراد جاں بحق

مڈغاسکر میں طاعون کی وباءسے 40 افراد جاں بحق
مڈغاسکر میں طاعون کی وباءسے 40 افراد جاں بحق

  

انٹاناناریو(مانیٹرنگ ڈیسک) چوہوں سے پھیلنے والی بیماری ’طاعون‘ مڈغاسکر میں شدت اختیارکرگئی ہے اور 40افرادجاں بحق اور 80کے قریب افراد متاثرہیں جس کی تصدیقاقوامِ متحدہ کے ذیلی ادارے ڈبلیو ایچ او نے بھی کردی ہے ۔

عالمی ادارہ صحت ڈبلیو ایچ او نے ملک کے دارالحکومت اینٹانانیریو میں اس وبا کے ’تیزی سے پھیلنے کے خطرے‘ کے بارے میں خبردار کرتے ہوئے کہاہے کہ پسوو¿ں کا کیڑے مار ادویات کے ایک اعلیٰ برانڈ کے خلاف بڑی قوتِ مدافعت کی وجہ سے حالات ابتر ہو گئے ہیں،انسان کو عام طور پر جب طاعون کے جراثیم سے متاثرہ پسو کاٹتا ہے تو وہ بیوبانک پلیگ یا کالے طاعون کا شکار ہو جاتا ہے۔ یہ متاثرہ پسو چوہوں میں پائے جاتے ہیں۔اگر انسانوں میں اس طاعون کا جلدی پتہ چل جائے تو اس کا اینٹی بائیوٹکس کے ذریعے علاج ممکن ہے لیکن مڈغاسکر میں دو فیصد کیسز خطرناک نمونیا کی قسم کے طاعون کے ہیں اور متاثرہ شخص کی کھانسی سے دوسرے افراد تک یہ بیماری پھیل سکتی ہے۔

یادرہے کہ اس بیماری کے وبا کا پہلا کیس دارالحکومت اینٹانانیریو کے مغرب میں 200 کلو میٹر کے فاصلے میں واقع ضلع سیرونمانڈیڈی کے ایک گاو¿ں میں اگست کے اواخر میں سامنے آیا تھا اوروبا پر قابو پانے کے لیے ایک ٹاسک فورس قائم کی گئی ہے تاہم ابھی تک کوئی خاطر خواہ کامیابی حاصل نہیں ہوسکی ۔

مزید :

بین الاقوامی -