شامی جنگجو کس اسلام دشمن ملک میں اپنا علاج کروارہے ہیں؟ مغربی میڈیا کا تہلکہ خیز انکشاف

شامی جنگجو کس اسلام دشمن ملک میں اپنا علاج کروارہے ہیں؟ مغربی میڈیا کا تہلکہ ...
شامی جنگجو کس اسلام دشمن ملک میں اپنا علاج کروارہے ہیں؟ مغربی میڈیا کا تہلکہ خیز انکشاف

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

سڈنی (نیوز ڈیسک) شام میں برسر پیکار حکومت مخالف معتدل جنگجوﺅں کو امریکی حمایت حاصل ہے تو صدر بشارالاسد کی حکومت کو روسی حمایت حاصل ہے، جبکہ روس اور امریکہ دونوں ہی داعش کے مخالف ہونے کا اعلان کرچکے ہیں، لیکن اس جنگ میں اسرائیل جو کردار ادا کر رہا ہے وہ انتہائی مشکوک ہے کیونکہ یہ ملک چوری چھپے کچھ ایسے جنگجوﺅں کو پشت پناہی کررہا ہے کہ جو داعش کے خلاف بھی لڑرہے ہیں اور شامی صدر بشارالاسد کے خلاف بھی لڑرہے ہیں۔
ان عجیب و غریب معاملات کا انکشاف اس وقت ہوا جب میڈیا کمپنی ’نیوز کور‘ کی رپورٹر شیری مارکسن دیگر صحافیوں کے ساتھ اسرائیل کے دورے پر گئیں۔ اخبار دی گارڈین کے مطابق شیری ایک اسرائیلی ہسپتال میں گئیں تو یہ دیکھ کر حیران ہوئیں کہ وہاں کچھ شامی جنگجوﺅں کا علاج کیا جارہا تھا۔ سیکیورٹی اہلکاروں سے نظر بچا کر شیری نے کچھ جنگجوﺅں کے ساتھ گفتگو کی اور ان سے انتہائی اہم معلومات حاصل کیں لیکن دریں اثناءاسرائیلی سیکیورٹی کے اہلکار ان پر جھپٹ پڑے اور انہیں علیحدگی میں لے گئے جہاں پر ان سے خاصی دیر تک تفتیش کی جاتی رہی۔

مزید جانئے: عراق میں داعش کے تین سعودی رہنماﺅں سمیت 13سعودی جنگجوگرفتار
شیری مارکسن نے آسٹریلیا لوٹنے پر اس واقعے کے متعلق اظہار خیال کیا ہے۔ انہوں نے ٹوئٹر پر ایک بیان میں کہا کہ اسرائیل کے ہسپتال میں جن جنگجوﺅں کا علاج کیا جارہا ہے وہ شام میں بشارالاسد اور داعش کے خلاف برسرپیکار ہیں۔ انہوں نے لکھا ”شامی جنگجوﺅں نے میری تفصیلات حاصل کیں تاکہ وہ شام لوٹنے پر ایک صحافی کے ساتھ رابطے میں رہ سکیں۔ انہوں نے مجھے اپنے متعلق بھی تفصیلات فراہم کیں۔ اسرائیلی سیکیورٹی اہلکار زبردستی پر مائل تھے اور انہوں نے میرے فون اور نوٹ بک میں موجود معلومات کو ڈیلیٹ کرنے کا مطالبہ بھی کیا۔ “
اخبار گارڈین کا کہنا ہے کہ اسرائیل میں پہلے ہی 1300 شامی جنگجوﺅں کا علاج کیا جاچکا ہے، جن میں سے533 کا علاج زییو ہسپتال میں کیا گیا۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -