انسداد الیکٹرانک جرائم 2016 ایف آئی اے کی ششماہی رپورٹ موخر

انسداد الیکٹرانک جرائم 2016 ایف آئی اے کی ششماہی رپورٹ موخر

اسلام آباد (آئی این پی) چیئرمین سینیٹ میاں رضا ربانی نے وزارت داخلہ کی قانون انسداد الیکٹرانک جرائم 2016کے تحت ایف آئی اے کی ششماہی رپورٹ (کل ) تک موخر کر دی، چیئرمین سینیٹ جمعہ کو ایف آئی اے کی ششماہی رپورٹ ایوان میں پیش کرنے یا متعلقہ قائمہ کمیٹی میں ان کیمرہ پیش کرنے کے معاملے پر رولنگ دیں گے۔ ایوان بالا کے اجلاس میں قانون انسداد الیکٹرانک جرائم 2016کے تحت ایف آئی اے کی سرگرمیوں سے متعلق ایف آئی اے کی ششماہی رپورٹ میں تیاری اور ایوان میں پیش کرنے میں تاخیر کے معاملے پر گفتگو کرتے ہوئے پیپلزپارٹی کے رہنما سینیٹر فرحت اللہ بابر نے کہا کہ انسداد الیکٹرانک جرائم 2016کے تحت ایف آئی اے کی ششماہی رپورٹ سینیٹ میں تو پیش کر دی گئی ہے لیکن سینیٹرز کو ابھی تک نہیں دی گئی، رپورٹ تاخیر سے جمع کرائی گئی، بل کے تحت ایف آئی اے کو وسیع اختیارات دیئے گئے، ایف آئی اے چھاپے مار کر الیکٹرانک ڈیوائس قبضہ میں لے سکتی ہے، صارف کے ڈیٹا کے حوالے سے کوئی تحفظ نہیں تھا،28جون کو ایک صحافی کو قابل اعتراض مواد سوشل میڈیا پر پوسٹ کرنے کے الزام میں گرفتار کیا گیا، رپورٹ کو ہاؤس میں پیش کرنا چاہیے۔ جاوید عباسی نے کہا کہ سائبر کرائمز کی روک تھام کے حوالے سے انسداد الیکٹرانک جرائم قانون بہت اچھا ہے، قانون کے تحت ایف آئی اے اس قانون کے تحت اپنی ششماہی رپورٹ پارلیمنٹ میں پیش کرے گی۔ شبلی فراز نے کہا کہ رپورٹ کو ایوان میں پیش کرانے کا مقصد ایف آئی اے کی اس قانون کے حت کی گئی کارروائیوں کو مانیٹر کرنا تھا، اس قانون پر عملدرآمد کرانے کیلئے وکلاء اور ججوں کے پاس تجربہ نہیں ہے۔

ششماہی رپورٹ

مزید : صفحہ آخر