زیروٹالرنس پالیسی کیساتھ نیا جذبہ لئے فرائض سر انجام دینے کیلئے پرعزم ہیں: چیئرمین نیب

زیروٹالرنس پالیسی کیساتھ نیا جذبہ لئے فرائض سر انجام دینے کیلئے پرعزم ہیں: ...

اسلام آباد (آئی این پی) قومی احتساب بیورو(نیب) کے چیئرمین جسٹس(ر) جاوید اقبال نے کہا ہے کہ نیب ملک سے بدعنوانی کے خاتمہ اور بدعنوان عناصر کے خلاف زیروٹالرنس کی پالیسی اپناتے ہوئے نئے جذبے، توانائی، محنت، لگن، میرٹ ،شفافیت، ٹھوس شواہد اور قانون کے مطابق اپنے فرائض سرانجام دینے کیلئے پرعزم ہے، شکایت موصول ہونے سے ریفرنس دائر کرنے کیلئے10 ماہ کا جو وقت مقرر کیا گیا ہے اس پر سختی سے عمل کیا جا رہا ہے، نیب کی طرف سے معزز احتساب عدالتوں میں جو ریفرنس دائر کئے جائیں گے ان کا ذاتی طور پر جائزہ لے رہا ہوں تا کہ قانون کے تمام تقاضوں کو پورا کیا جا سکے ۔ان خیالات کا اظہارقومی احتساب بیورو(نیب)کے چیئرمین جسٹس(ر) جاوید اقبال نے 22نومبر 2017کو اپنے عہدے کی مدت پوری کر کے سبکدوش ہونے والے نیب کے پراسیکیوٹر جنرل اکاؤنٹیبلٹی وقاص قدیر ڈار کے اعزاز میں منعقدہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے ان کی پیشہ وارانہ صلاحیتوں کی تعریف کی، اس موقع پر امتیاز تاجور ڈپٹی چیئرمین نیب بھی موجود تھے۔انہوں نے کہا کہ نجی ہاؤسنگ سوسائٹیوں اور کو آپریٹیو ہاؤسنگ سوسائیٹیوں کے مقدمات سالہا سال سے نیب میں چل رہے ہیں، جس کی وجہ سے سرکاری ملازم، پنشنرز اور عوام اپنی زندگی بھر کی جمع پونجی خرچ کرنے کے باوجود نہ تو ان کو پلاٹ دیئے گئے ہیں اور نہ ہی ان کی جائز اور قانونی رقم واپس کی جا رہی ہے، جس کی وجہ سے وہ بے حد پریشان اور دربدر کی ٹھوکریں کھا رہے ہیں، میں نیب کے متعلقہ افسران کو ہدایت کرتا ہوں کہ نجی ہاؤسنگ اور کو آپریٹیو ہاؤسنگ سوسائٹیوں کے مقدمات کو مقررہ مدت کے اندر منطقی انجام تک پہنچایا جائے اور نجی کو آپریٹیو سوسائٹیوں کے متاثرین کی واپسی کیلئے کوئی کسر اٹھا نہ رکھی جائے۔

مزید : صفحہ آخر