وکلا عدلیہ کیخلاف مہم جوئی برداشت نہیں کریں گے،ذوالفقار چودھری

وکلا عدلیہ کیخلاف مہم جوئی برداشت نہیں کریں گے،ذوالفقار چودھری

لاہور(نامہ نگار)لاہور ہائیکورٹ بار نے عدلیہ کی کردار کشی اور ملکی موجودہ صورتحال کے حوالے سے امور کا جائزہ لینے کے لئے 9 دسمبر کوآل پارٹیز کانفرنس طلب کرلی ہے ،بار کے عہدیداروں نے نااہل شخص کو پارٹی سربراہ بنانے کے بل کی منظوری کو افسوس ناک قرار دیاہے۔لاہور ہائیکورٹ بار ایسوسی ایشن کے صدر ذوالفقار چودھری نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ وکلاء کا کوئی سیاسی ایجنڈا نہیں مگر عدلیہ کی بے توقیری اور اداروں کے خلاف مہم جوئی کو برداشت نہیں کر سکتے، موجودہ ملکی صورتحال کے پیش نظر9 دسمبر کو آل پارٹیز کانفرنس بلا لی گئی ہے، ملکی آئین میں تمام اداروں کی حدود متعین ہیں ،نظام کو ڈی ریل ہوتا ہوا نہیں دیکھنا چاہتے ہیں،ملک میں عدلیہ کا ایک ہی ادارہ اپنا کام کر رہا ہے جس کی کردار کشی برداشت نہیں کی جائے گی،سابق وزیراعظم میاں محمد نواز شریف نے ایبٹ آباد میں توہین آمیز تقریر کی جس کی مذمت کرتے ہیں،انہوں نے مزید کہا کہ مسلم لیگ (ن) سمیت تمام سیاسی جماعتیں ہمارے ساتھ رابطے میں ہیں ،بلاتفریق تمام سیاسی جماعتوں کو آل پارٹیز کانفرنس میں مدعو کیا جائے گا، لاہور ہائی کورٹ بار کے نائب صدرراشد لودھی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ نااہل اورکرپٹ میاں نوازشریف جمہوریت کے لئے خطرہ بن چکے ہیں،نااہل وزیر اعظم عہدے سے برطرفی کے بعد ذہنی توازن کھو بیٹھے ہیں،انہوں نے مزیدکہا کہ نااہل وزیراعظم دنیا بھر میں اداروں کی کردار کشی کر کے جمہوریت کو نقصان پہنچا رہے ہیں ،ان کا نظریہ کرپشن اور اس کا تحفظ ہے، لاہور ہائیکورٹ بار کے سیکرٹری عامر سعید راں نے کہا کہ عدلیہ کی کردار کشی کا سلسلہ بند نہ کرنے پر لائحہ عمل طے کرنے کے لئے آل پارٹیز کانفرنس بلائی گئی ہے،انہوں نے کہا کہ اسلام آباد میں دھرنے والوں سے مذاکرات کئے جائیں ان پر سختی نہ کی جائے۔ پاکستان بھر کی بارز اور سیاسی جماعتوں سے رابطے شروع کر دئیے گئے ہیں جبکہ آل پاکستان وکلاء کانفرنس میں حکومتی جماعت کے نمائندگان کو بھی مدعو کیا جائے گا۔

ذوالفقار چودھری

مزید : علاقائی