بددعا کا اثر،جھوٹا الزام لگانے والی عورت اندھی ہوکر مرگئی

بددعا کا اثر،جھوٹا الزام لگانے والی عورت اندھی ہوکر مرگئی
بددعا کا اثر،جھوٹا الزام لگانے والی عورت اندھی ہوکر مرگئی

  

نیک پارسا اور بے گناہ لوگوں پربہتان لگانے والوں کی بددعا سے بھی بچنا چاہئے ،اللہ جنہیں اپنا دوست کہتا ہے ان کی دعاو¿ں کی لاج رکھتا ہے ۔ بخاری و مسلم شریف میں ایک ایسے واقعہ کو بیان کیا گیا ہے جب ایک صحابیؓ پرغلط الزام لگایا گیا تو انہو ں نے الزام لگانے والے کے لئے بددعا کی تو یہ قبول ہوئی۔واقعہ یوں ہے کہ حضرت سعید بن زید عمر و ؓ پر ایک عورت نے دعویٰ کیا کہ انہوں نے اسکی کچھ زمین غصب کر لی ہے۔ یہ سن کر حضرت سعیدؓ بولے ”اے خدا! اگر یہ جھوٹی ہے تو اسے اندھا کر دے اور اسے زمین ہی میں قتل کر“۔

مرنے سے کچھ دنوں پہلے وہ اندھی ہو گئی۔ ایک دن کچھ ٹٹولتی پھر رہی تھی کہ ایک گڑھے میں گر کر مر گئی۔

مزید :

روشن کرنیں -