قتل کے 2 ملزموں کی سزائے موت عمر قید میں تبدیل کرنیکا حکم

قتل کے 2 ملزموں کی سزائے موت عمر قید میں تبدیل کرنیکا حکم

  

ملتان (خبر نگار خصوصی)لا ہور ہا ئیکورٹ ملتان بینچ نے قتل کے مقدمات میں2 ملزموں کی سزائے موت عمرقیدتبدیل کرنے کا حکم دیاہے۔فاضل عدالت میں ملزم محمداسلم نے اپیل دائر کی تھی کہ اس کے خلاف تھانہ دراہمہ میں 2 مئی 2012 ء کورشتہ کے تنازعہ پر فائرنگ کرکے رضومائی کو قتل کرنے کے مقدمہ میں سیشن کورٹ ڈی جی خان نے 6 اپریل 2013 ء کو سزائے موت کا حکم دیاتھا۔اس طرح ملزم ابرار(بقیہ نمبر42صفحہ12پر )

نے اپیل دائر کی تھی کہ اس کے خلاف تھانہ نورشاہ میں 13 جولائی 2010 ء کوعبدالرزاق کو چھریوں کے وارکرکے قتل کرنے کے مقدمہ میں سیشن کورٹ ساہیوال نے 28 نومبر2012 ء کواس کو سزائے موت کا حکم دیاتھا۔دونوں ملزموں کے مطابق وہ بے گناہ ہیں اوران کو بدنیتی کے تحت مقدمہ میں ملوث کیاگیاہے۔اس لئے ان کو بری کرنے کا حکم دیاجائے۔ دریں اثناء ایڈیشنل سیشن جج ملتان نے قتل کے مقدمہ میں ملوث ملزم کو عمرقید اور2 لاکھ روپے معاوضہ اداکرنے کی سزاکاحکم دیاہے۔فاضل عدالت میں پولیس تھانہ بدھلہ سنت کے مطابق 13 نومبر2014 ء کوفضل محمودنے مقدمہ درج کرایاکہ ملزموں نے اپنے بھائی کے قتل کابدلہ لینے کے لئے اس کے بھانجے افضل محمودعرف کالاکو گھر سے جاتے ہوئے روک کرفائرنگ کردی جس سے وہ موقع پر جاں بحق ہوگیاجبکہ اس کا ملزموں کے بھائی کے قتل سے کوئی تعلق نہیں تھا۔فاضل عدالت میں ملزم اعجازحسین کے مطابق وہ بے گناہ ہے اوراس کو غلط طورپر مقدمہ میں ملوث کرنے کے ساتھ اصل حقائق بھی نہیں بتائے گئے ہیں۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -