شانگلہ پولیس نے اندھے قتل کا سراغ لگا لیا،قاتل آلہ قتل سمیت گرفتار

شانگلہ پولیس نے اندھے قتل کا سراغ لگا لیا،قاتل آلہ قتل سمیت گرفتار

الپوری(ڈسٹرکٹ رپورٹر) شانگلہ پولیس نے اندھے قتل کا سراغ لگا لیا ۔ تھانہ مارتنگ کے پولیس قتل کے اطلاع پر کارروائی قاتل گرفتار۔جرم میں استعمال اسلحہ بھی برامد۔ مسمی منصف نے پولیس کو رپور ٹ کرتے ہوئے بیان کیا ہے کہ گزشتہ شب ملزم /7 ملزمان نامعلوم نے اس کے باپ مسمی باچا عالم کو گھر کے اندر فائرنگ کر کے قتل کیا ہے۔ جس پر پولیس نے نا معلوم ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کر کے تفتیش شروع کی،ایک اندھا اور اہم مقدمہ ہونے کے باعث ڈی پی او شانگلہ راحت اللہ خان کے ہدایت پرایس پی انوسٹی گیشن شانگلہ خالد خان کے زیر نگرانی ایک تفتیشی ٹیم تشکیل دے دی جو اصل ملزم/ملزمان کو جلد از جلد گرفتار کرنے اور اصل حقائق کو منظر عام پر لایا جاسکیں،دوران تفتیش مقتول ،اس کے بیٹے اور دیگر مشتبہ گان کا موبائل ریکارڈ حا صل کیا گیا۔جس میں سے مدعی فریق نے موبائل نمبر 03441516741 پر چند عرصہ پہلے مقتول کو دھمکی آمیز کالزکرنا بیان کیا جس کا ذکر مقتول پہلے ان سے کر چکا تھا۔ انوسٹی گیشن ٹیم نے جدید سائنسی طریقے پر مذکورہ نمبر کا سراغ لگا کرسم مسماۃ نایاب دختر افضل خان کے نام پر درج تھا جو کہ مقتول کی بھانجی ہے۔دوران انٹاروگیشن مسماۃ نایاب نے ا نکشاف کرکے بتایا کہ ایک سال پہلے اس کے ماموں مسمی ریاض عالم نے ایک بائیو میٹرک ڈیوائس اس کے گھر لاکر اس سے نشان انگشت لگوائی لیکن اس کو کوئی سم نہیں دیا گیا۔اس لائن میں آگے بڑھتے ہوئے پولیس نے ریاض عالم جو کہ مقتول کا سگہ بھائی ہے کو شامل تفتیش کرکے نہایت حکمت عملی سے انٹاروگیٹ کیا ۔ ملزم ریاض عالم نے اپنے جرم کا اعتراف کرتے ہوئے ساری داستان سناکر بتایا کہ اس کی بھتیجی جوکہ اس کے مقتول بھائی کی بیٹی ہے کا مسمیٰ مرشد نامی شخص کے ساتھ ناجائز تعلقات تھے ، لیکن بعد میں اس کے بھائی نے اس لڑکی کی اسی شخص سے شادی کرائی جس پر وہ اور دیگر تمام خاندان کے لوگ اس سے اس پر نا راض تھے اور اس نے یہ فیصلہ کر چکا تھا کہ وہ اس سے بدلہ لے گا۔ملزم نے مزید بیان کیا کہ کچھ عرصہ پہلے اٹک سے اس کا ایک دوست ٹیلی نار سم مع ڈیوائس لاکر اس کو بتایا کہ یہ فروخت کریں،اس نے سم نمبر 03441516741 کو اپنی بھانجی مسماۃ نایاب کے نام پر اس سے نشان انگشت لگواکر اپنے استعمال کے لئے رجسڑڈ کرایا ۔جس پر اس نے کئی بار اپنے بھائی مقتول باچا عالم کے ساتھ وائس چینجر پر باتیں بھی کی ہے کہ وہ اپنی بیٹی کا طلاق لے لے لیکن وہ انکار کر رہا تھا۔اس انکار پر وہ غصہ ہوکر مورخہ 04.11.2017 کو اپنے بھائی کے گھر بوقت شب آکر اس پر بذریعہ کلاشنکوف اور پستول فائرنگ کرکے فرار ہو گیا۔پولس نے ملزم ریاض عا لم کو حسب ضابطہ گرفتار کرکے جس سے اس کی نشاندہی پر ایک عدد کلاشنکوف مع 23 عدد کارتوس،ایک عدد پستول 30 بورمع 10 عدد کارتوس اور دوران وقوعہ استعمال شدہ دیگر اشیاء جسمیں ٹارچ ،ماسک اور خاکی کپڑے شامل ہے بر آ مد کیے گئے۔اسی طرح دفعہ 449 ت پ کا اضا فہ بھی مقدمہ میں کیا گیا۔جس طرح یہ ایک اندھا مقدمہ تھا اور پولیس کیلئے ایک چیلنج سے کم نہ تھا لیکن اپریشن سٹاف اور تفتیشی ٹیم نے بھر پور محنت کرکے جدید سائنسی طریقہ کار کو بروئے کار لاتے ہوئے مقدمہ کوکامیابی سے ہمکنار کیا ۔ ملزم نے پولیس کے روبرو اپنے جرم کا اعتراف کیا ہے۔ شانگلہ میں انوسٹی گیشن مثالی پولیس ہیں عوام ان کی کارکردگی سے مطمئن ہیں

مزید : پشاورصفحہ آخر