”یہ سب اس لیے ہو رہا ہے تاکہ ۔۔۔“تحریک لبیک کے دھرنے پر سپریم کورٹ نے ایسی بات کہہ دی کہ دھرنا دینے والوں کو ہلا کر رکھ دیا

”یہ سب اس لیے ہو رہا ہے تاکہ ۔۔۔“تحریک لبیک کے دھرنے پر سپریم کورٹ نے ایسی ...
”یہ سب اس لیے ہو رہا ہے تاکہ ۔۔۔“تحریک لبیک کے دھرنے پر سپریم کورٹ نے ایسی بات کہہ دی کہ دھرنا دینے والوں کو ہلا کر رکھ دیا

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )فیض آباد میں تحریک لبیک کے دھرنے سے متعلق ازخود نوٹس کیس کی سماعت کے دوران سپریم کورٹ نے انتظامیہ پر برہمی کا اظہار کیا ہے ۔اس موقع پر ریمارکس دیتے ہوئے جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے کہا کہ اپنی شہرت کے لیے سب کچھ ہو رہا ہے تاکہ نام بن جائے ،لوگوں کو تکلیف ہو رہی ہے ،راستہ بند کرنے کا ایک حوالہ دے دیں ،اس پر ڈپٹی اٹارنی جنرل نے کہا کہ اسلا م میں کہیں بھی ایسا نہیں لکھا ۔جسٹس فائز عیسیٰ نے کہا کہ پاکستان کو دلائل کی بنیاد پر بنا یا گیا ،جب دلیل کی بنیاد ہی ختم ہو جائے ،ڈنڈے کے زور پر صحیح بات اچھی نہیں لگتی ۔ان کا کہنا تھا کہ دشمنوں کے لیے بڑا آسان ہے کہیں آگ لگا دے اور ہم آپس میں لڑتے رہیں ۔انہوں نے کہا کہ احکام الہٰی پر عمل نہیں ہو رہا اور ریاست کا سرجھکا ہوا ہے ،جب ریاست ختم ہو گی تو فیصلے سڑکوں پر ہوں گے ۔اس موقع پر جسٹس مشیر عالم نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ حکومت پنجاب تمام حالات سے آگاہ تھی لیکن کوئی اقدامات نہیں اٹھائے ،ریاست کے اداروںکا کردار کدھر ہے ۔انہوں نے استفسار کیا کہ دھرنے والوں کو چائے،کھانا اور موبائل سگنل کہاں سے آ رہے ہیں ،گولیاں نہ برسائی جائیں لیکن دھرنے والوں کی سہو لیات بند کردی جائیں ۔عدالت نے پوچھا کہ 17دنوں سے دھرنے والوں کے کھانے پینے کا بندو بست ہو رہا ہے جبکہ قریب کوئی ہوٹل بھی نہیں ہے ۔انہوں نے کہا کہ دھرنے میں جس زبان کا استعمال کیا جا رہا ہے ،اس کی اسلام میں کوئی اجازت نہیں ۔جسٹس فائز عیسیٰ نے کہا کہ بنیادی بات یہ ہے کہ کیا اسلام میں ڈنڈا ہے ،اگر کوئی شرعی معاملہ ہے تو شرعی عدالتیں موجود ہیں ۔

مزید :

قومی -