ملک میں تعلیم عام کرنے کیلئے مشترکہ کوششوں کی ضرورت‘ چودھری محمد سرور

    ملک میں تعلیم عام کرنے کیلئے مشترکہ کوششوں کی ضرورت‘ چودھری محمد سرور

  



بہاولپور‘ حاصل پور (ڈسٹرکٹ رپورٹر‘ نامہ نگار) بہاولپوربہاولپور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے ایک وفد نے صدرچیمبرجاوید اقبال چوہدری کی قیادت میں بہاولپور کے دورے پر آئے ہوئے گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور سے سرکٹ ہاؤس میں ملاقات کی۔ اس موقع پر بہاولپور چیمبر کے سینئر نائب(بقیہ نمبر53صفحہ12پر)

صدر احمد بلال،نائب صدر محمد الیاس خان، اراکین ایگزیکٹو چوہدری تنویر اختر، منظور عباس نسیم، سابق صدورمبشر حسین، سیٹھ محمد ارشد، غلہ منڈی بہاولپور کے سابق صدر حاجی عبد المجیداور ڈاکٹر محمد افضل ایم پی اے موجود تھے۔ صدر چیمبر نے چیمبر کی جانب سے مطالبات پیش کرتے ہوئے بہاولپو ر انڈسٹریل اسٹیٹ کے فنڈز پر بات کرتے ہوئے کہا کہ اس وقت فنڈز کی کمی کی وجہ سے انڈسٹریل اسٹیٹ پر جاری تعمیراتی کام سست روی کا شکار ہے لہذا اسٹیٹ میں تیز رفتاری سے کام کی تکمیل کے لیے فوری طور پر فنڈز جاری کیے جائیں جس کے لیے 25کروڑ رپے بجٹ میں رکھے گئے ہیں تا حال PIEDMCکو جاری نہیں کیے گئے اوراپروچ روڈ کے لیے جن زمین مالکان کی زمینیں انڈسٹریل اسٹیٹ میں آچکی ہیں ان مالکان کو انکی زمینوں کی رقم کی ادائیگیاں جلد کرائی جائیں۔صدر چیمبر نے CPECکے حوالے سے بات کرتے ہوئے کہا کہ CPECکے ثمرات سے بہاولپور کو محروم رکھنا افسوس ناک ہے لہذا ہمارا مطالبہ ہے کہ بہاولپورکو بھی CPECسے منسلک کیا جائے اور موٹر وے کے ذریعے اپروچ دی جائے۔صدر چیمبر نے بہاولپور میں پینے کے صاف پانی کے لیے شہر میں واٹر فلٹریشن پلانٹس کی تنصیب پر بھی بات کی۔ بہاول کلب پر بات کرتے ہوئے صدر چیمبر نے کہا کہ اس وقت بہاول کلب مکمل طور پر فعال نہیں ہے اور اس کی ممبر شپ نہیں ہو رہی لہذا بہاول کلب کے لیے فنڈز جاری کرکے اسے بھی ہنگامی بنیادوں پر فعا ل کیا جائے اور بزنس کمیونٹی کو اس کی ممبر شپ جاری کی جائے۔صدر چیمبرنے یہ بھی کہا کہ جنوبی پنجاب میں کہیں بھی EXPO Center نہیں ہے لہذا بہاولپور میں اس کے قیام کو بھی یقینی بنایا جائے۔Industry-Academia Linkages کو فروغ دینے کے لیے حکومت سے تعاون کی درخواست کی گئی، کاٹن کی بہترین پیداوار کے حصول کے لیے کاٹن سیڈ پر بات کرتے ہوئے صدر چیمبر نے کہا کہ بہاولپور ڈویژن میں کپاس کی پیداوار وسیع پیمانے پر کی جاتی ہے لیکن حاصل ہونے والی پیداوار بر آمد کے لیے بین لاقوامی معیارپر پورا نہیں اترتی لہذاکپاس کی بہترین پیداوار کے لیے کوالٹی سیڈ کی دستیابی کویقینی بنایا جائے۔گورنرپنجاب نے صدر چیمبر کی جانب سے پیش کیے جانے والے مطالبات کو جاننے کے بعد انڈسٹریل اسٹیٹ کی تعمیر کے لیے مختص فنڈز کے اجراء کی جلدیقین دہانی کرائی۔ انہوں نے ملاقات میں موجود کمشنر بہاولپور ڈویژن نیئر اقبال کو بہاولپور انڈسٹریل اسٹیٹ میں زمین مالکان کے واجب الادا رقوم کی جلد ادائیگی کے احکامات دئیے۔ پینے کے صاف پانی پر بات کرتے ہوئے گورنر پنجاب نے کہا کہ پورے پنجاب میں اس پر کام ہو رہا ہے اور نئے پلانٹس لگانے کے لیے بہاولپور کو ترجیح دی جائے گی۔ بہاولپور کو CPECسے منسلک کرنے اور ایکسپو سنٹر کے قیام پر انہوں نے اپنے تعاون کا یقین دلایا اور یہ بھی کہا کہ وہ بہاولپور چیمبر کے مطالبات کو ذاتی طور پر دیکھیں گے اوریہ بھی یقین دلایا کہ صوبائی حکومت بہاولپور چیمبر کے ساتھ اپنا تعاون جاری رکھے گی، انہوں نے کمشنر بہاولپور ڈویژن کو بھی ہدایت کی کہ وہ اس سلسلے میں بہاولپور چیمبر سے مکمل تعاون کریں۔ گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور نے کہا ہے کہ بہاول پور کی تحصیل خیر پور ٹامیوالی میں 200جوڑوں کی اجتماعی شادی میں شرکت ان کے لئے ایک اعزاز اور باعث خوشی ہے۔ وہ گوٹھ شاہ محمد تحصیل خیر پور ٹامیوالی میں پی ٹی آئی رہنما نعیم الدین وڑائچ کی جانب سے منعقدہ اجتماعی شادی کی تقریب سے خطاب کر رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ وہ گورنر ہاؤس میں عنقریب 200بیٹے بیٹیوں کی اجتماعی شادی کی تقریب کا انعقاد کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ سابق گورنر خالد مقبول بھی اس سے قبل اجتماعی شادی کا انعقاد کیا کرتے تھے۔انہوں نے کہا کہ ہمارے نبی پاکؐ کا حکم ہے کہ یتیم اور مسکین کے سر پر ہاتھ رکھو۔ گورنر نے کہا کہ پچھلی بار جب وہ گورنر تھے تو ان کو گلاسکو میں مقیم اپنے بچوں کے ساتھ عید منانا تھی لیکن انہوں نے اپنی اہلیہ کے ہمراہ لاہور کی یتیم بچیوں کے ساتھ عید منائی۔انہوں نے کہا کہ جو بھی مخیر شخصیت 50یا اس سے زائد اجتماعی شادی کا بندوبست کرے گا تو وہ اس تقریب میں ضرور شریک ہوں گے۔ گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور نے کہا کہ ہماری حکومت ہر گاؤں اور شہر میں پینے کا صاف اور شفاف پانی فراہم کرے گی۔انہوں نے کہا کہ 50فیصد لوگ مضر صحت پانی پینے کی وجہ سے بیمار ہو کر ہسپتالوں کا رخ کرتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ آج کل کتنے ہی بچے بچیاں علاج معالجہ تک رسائی نہ ہونے کے سبب اس دنیا سے رخصت ہو جاتے ہیں۔گورنر پنجاب نے کہا کہ بہاول پور سے ان تعلق بہت پرانا ہے۔ وہ گرمیوں کی چھٹیاں منانے بہاول پور آیا کرتے تھے۔ انہوں نے کہا کہ آج بھی برطانیہ کے شاہی خاندان کے افراد بہاول پور کے نواب کو یاد کرتے ہیں اور ان کو اپنا محسن سمجھتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اسلامیہ یونیورسٹی بہاول پور بہت اچھا کام کر رہی ہے اور جلد ہی اس کا شمار صف اول کی جامعات میں کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ آج کل انٹر پرینیو ر شپ کا دورہے اور یونیورسٹیز کو کاروبار کے نئے آئیڈیاز دینے چاہئیں تاکہ کاروباری افراد ان آئیڈیاز پر عمل پیرا ہو کر ملک و قوم کی خدمت کر سکیں۔نیز ہم نے میرٹ کی بنیاد پر صوبہ بھر میں 20نئے وائس چانسلرز تعینات کئے ہیں۔گورنر پنجاب نے کہا کہ آج مسلم امہ جن مشکلات کا شکارہے۔ اس کا واحد حل نبی پاک ؐ اور صحابہ کرام ؓ کے نقشہ قدم پر چل کر نکالا جا سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آج ہمارے 2کروڑ بچے تعلیم کی سہولت سے محروم ہیں۔انہوں نے کہا کہ ہم تعلیم کو عام کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں سچ بولنا شروع کرنا ہے جب تک قانون کی حکمرانی نہ ہو گی تب تک معاشرہ بہتر نہیں بن سکتا۔انہوں نے کہا کہ سابق دور میں گورنر شپ اس لئے چھوڑی کہ اس وقت قبضہ مافیا گورنر سے زیادہ طاقتور تھا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستانی حکمرانوں اور سیاست دانوں کو اللہ تعالیٰ ہدایت دے۔۔انہوں نے کہا کہ تاریخ ان لوگوں کو زندہ رکھتی ہے جو عوام کی خدمت کرتے ہیں۔تقریب میں صوبائی وزیر خوراک سمیع اللہ چوہدری، پی ٹی آئی رہنما فرزند علی گوہیر، اصغر علی جوئیہ، عقیل الرحمن، عنایت کریم،چیئرپرسن پی ایچ اے شہلا احسان ملک، ممبر وزیر اعلیٰ شکایت سیل ڈاکٹر شگفتہ اعجازودیگر عمائدین شہر، سول سوسائٹی کے اراکین، ذرائع ابلاغ کے نمائندگان سمیت دولہا، دلہن کے والدین وعزیزو اقارب کی کثیر تعداد شریک تھی۔ اس موقع پر ایم این اے فاروق اعظم، ایم این اے رحیم یارخاں چوہدری ظفر اقبال، میاں فرزند علی گوہیر، محمد اصغر جوئیہ، انجمن تاجران بہاولپور کے صدرسید اسرار حسین شاہ، مرکزی انجمن تاجران کے صدر ڈاکٹر منصور خاں کھرل، سعد اللہ چوہدری، چوہدری وسیم الدین وڑائچ، چوہدری کلیم الدین وڑائچ، چوہدری علیم اللہ وڑائچ کے علاوہ بہاولپور، خیر ٹامیوالی اور حاصل پور پی ٹی آئی کے راہنماؤں اور کثیر تعداد میں معززین نے شرکت کی بعدازاں براتیوں کو کھانا اور دولہنوں کو جہیز بھی دیا گیا۔۔

چودھری محمد سرور

مزید : ملتان صفحہ آخر