ایم ایم عالم

ایم ایم عالم

  



صبح سات ستمبر نے یہ منظر دیکھا

اور دنیا والوں نے چھتوں پر چڑھ کر دیکھا

سرگودھا بیس کی جانب دشمن طیارے

تیزی سے بڑھے تھے چنگھاڑتے ہوئے سارے

تیز نظر نے ایم ایم عالم کی بھانپ لیا

رخ طیارے کا جانب ان کی موڑ دیا

اور پھر چشم فلک نے منظر یہ عجب دیکھا

آنکھوں سے ٹپکتا ہوا عالم کی، غضب دیکھا

سیکنڈ پچاس میں، دشمن کے مار گرائے

طیارے پانچ، فضاؤں میں بھک سے اُڑائے

اہل عالم کو عالم نے حیران کیا

اور دشمن ازلی کو اپنے پریشان کیا

غلطی کا اپنی عدو نے بھگتا تھا خمیازہ

ہم نے تارہ جرأت سے عالم کو نوازہ

ایم ایم عالم کا دنیا میں نام رہے گا

یاسین زبانِ زد خاص و عام رہے گا

مزید : ایڈیشن 1