ریل گاڑی اور ریلوے سٹیشن

ریل گاڑی اور ریلوے سٹیشن

  



ریل گاڑی انیسویں صدی کی حیرت انگیز ایجاد ہے۔ ہوائی جہاز اور ریل گاڑی ایجاد ہونے کے بعد سفر کرنے میں آسانی پیدا ہو گئی۔ مہینوں کا سفر گھنٹوں اور دنوں میں ہونے لگا۔ ریل گاڑی زمینی سفر میں سب سے تیز رفتار سواری ہے 1801ء میں پہلی بار ریل گاڑی لندن میں چلائی گئی جسے گھوڑے کھینچتے تھے۔ واٹ ٹری وی تھک اور دیگر سائنسدانوں کی کوششوں سے بھاپ کا پہلا انجن تیار ہونے پر 1804ء میں پہلی میکنیکل ٹرین چلائی گئی 1805ء میں جارج اسٹیفن نے ایسا انجن بنایا، جس کی رفتار پندرہ میل فی گھنٹہ تھی۔ انگلینڈ میں 1825ء میں پہلی ریلوے لائن بچھائی گئی تو جارج اسٹیفن کا بنایا ہوا یہ انجن لگایا گیا۔ اس انجن کا نام راکٹ تھا جارج اسٹیفن کو فادر آف ریلوے کہا جاتا ہے۔ دنیا بھر کے ممالک میں ریلوں کا جال بچھا ہوا ہے۔ انجنوں اور گاڑیوں کی ساخت اور رفتار انتہا کو پہنچی ہوئی ہیں۔ انجنوں نے بہت ترقی کی ہے۔ جدید قسم کے انجن بنائے گئے ہیں۔ دنیا میں سب سے زیادہ ریل گاڑیاں امریکہ میں چلتی ہیں۔ آج کل ریل گاڑیوں کے ڈبے مختلف سہولیات سے آراستہ ہوتے ہیں۔ امریکہ میں پہلی ریل گاڑی 1830ء میں چلی تھی۔ اس کا نام دی بیٹ فرینڈ تھا۔ دنیا کی سب سے پہلی مسافر ریل گاڑی 27 ستمبر 1825ء کو برطانیہ کے شہر سٹالن سے ڈارلنگٹن تک چلی۔ دنیا کی سب سے لمبی ریل گاڑی امریکہ کی ہے۔ دنیا کی تیز رفتار ریل گاڑی شنگھائی میگوچین کی ہے۔ یہ ریل گاڑی 26 جون 2017ء کو بیجنگ اور شنگھائی کے درمیان اپنے پہلے سفر پر روانہ ہوئی تھی۔ دوسری تیز رفتار ریل گاڑی اٹلی کی اور تیسری تیز رفتار ٹرین فرانس کی ہے۔ فرانس کا مصروف ترین ریلوے اسٹیشن Gare due nord ہے۔ یہ یورپ کا بھی مصروف ترین ریلوے اسٹیشن ہے۔ یورپ کا دوسرا بڑا ریلوے اسٹیشن سپین میں ہے۔ بلٹ ٹرین Hideo Shimx نے ایجاد کیا۔ دنیا کی تیز رفتار بلٹ ٹرین جاپان کی ہے۔ اس کی رفتار 249 میل فی گھنٹہ ہے۔ دنیا کی سب سے لمبی کار کو ٹرین یونین پیسیفک ٹرین امریکہ کی ہے۔ دنیا کا مصروف ترین ریلوے اسٹیشن Station Shinjulkn ٹوکیو جاپان میں ہے اس کے 36 پلیٹ فارم ہیں۔ اس اسٹیشن کا افتتاح 1825ء میں ہوا تھا۔ دنیا کا دوسرا مصروف ترین ریلوے اسٹیشن Shnby station بھی ٹوکیو جاپان میں ہے۔ افریقہ میں سب سے لمبی ٹرین زمبابوے میں چلتی ہے۔ افریقہ کا سب سے بڑا ریلوے اسٹیشن جو ہنسبرگ پارک اسٹیشن جنوبی افریقہ میں ہے۔ چین کا سب سے بڑا ریلوے اسٹیشن بیجنگ ریلوے اسٹیشن ہے۔ یہ 1959ء میں قائم ہوا تھا۔ دنیا کا سب سے بڑا سب وے سسٹم سبیؤل سب وے جنوبی کوریا میں ہے۔ دنیا کی سب سے لمبی ریلوے لائن ٹرانس سائبرینا ریلوے ماسکو سے ولادی واسک تک 6 ہزار 152 میل لمبی ہے ٹرانس سائبرین ریلوے 1916ء سے کام کر رہی ہے۔ مسافروں کے لئے یہ دنیا کا طویل ترین ریل کا سفر ہے۔ دنیا کی سب سے زیادہ جدید اور تیز ترین ریل گاڑیاں تیار کرنے والی سب سے بڑی چینی کمپنی سی آر سی جی سی ہے۔ میٹرو ٹرین پہلی مرتبہ 1863ء میں چلی۔ 23 فروری 1983ء کو لندن میں ریلوے کی تاریخ میں پہلی بار این ڈنٹر نامی 23 سالہ خاتون نے پسنجر ٹرین چلا کر پہلی خاتون ڈرائیور ہونے کا اعزاز حاصل کر لیا۔ دنیا کا سب سے بلند ریلوے اسٹیشن بولیویا کا کولڈ ور اسٹیشن ہے جو سطح سمندر سے 15 ہزار فٹ بلند ہے دنیا کا سب سے بڑا ریلوے اسٹیشن گرانڈ سنٹرل ٹرمینل نیو یارک پارک ہے۔ دنیا کا سب سے لمبا ریلوے پلیٹ فارم گورکھ پوپلیٹ نامی مغربی بنگال انڈیا میں ہے۔ برصغیر میں کان مہترزئی (بلوچستان) سب سے اونچا ریلوے اسٹیشن ہے پاکستان کا سب سے بڑا ریلوے اسٹیشن لاہور ہے۔ پاکستان کا سب سے طویل پلیٹ فارم کوٹری کا پلیٹ فارم ہے۔ برصغیر میں سب سے پہلے ہندوستان میں 1845ء میں کلکتہ سے رانی گنج بمبئی سے کلیان اور مدراس سے ایکو نام تک ریل کی پٹریاں بچھائی گئیں۔ پاکستان میں پہلی ریلوے لائن 1860ء میں کراچی سے کوٹری تک تقریباً 150 کلومیٹر پٹڑی پر مشتمل بچھائی گئی۔ پاکستان ریلوے ٹریک کی کل لمبائی 8775 کلومیٹر ہے پاکستان میں سب سے پہلے الیکٹرک ٹرین خانیوال سے لاہور تک 1970ء میں چلائی گئی پاکستان میں سب سے پہلے ڈیزل انجن کا استعمال 1952ء میں شروع ہوا۔ دنیا کی سب سے لمبی ا ور سب سے گہری ریلوے سرنگ گوٹ پارٹ ریلوے لنک سوئٹزر لینڈ میں واقع ہے۔ اس کی لمبائی 57 کلومیٹر ہے۔

مزید : ایڈیشن 1