گوجرہ حبس سے جا کیس،اے ایس آئی درخواست ضمانت خارج ہونے پر عدالت سے فرار

گوجرہ حبس سے جا کیس،اے ایس آئی درخواست ضمانت خارج ہونے پر عدالت سے فرار

  



گوجرہ (نمائندہ خصوصی) ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج گوجرہ فرخ حمید نے زیر دفعہ155سی کے مقدمہ میں ملوث تھانہ صدر گوجرہ کے اسسٹنٹ سب انسپکٹر پولیس محمد نوید کی درخواست ضمانت قبل از گرفتار ی خارج کرد ی جو احاطہ عدالت سے فرار ہونے میں کامیاب ہو گیا ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر ٹوبہ ٹیک سنگھ وقار عظیم قریشی نے تھانیدار محمد نوید کو معطل کر کے لائن حاضر کر رکھا ہے جس کے خلاف تھانہ سٹی گوجرہ میں مقدمہ نمبر 766/19 زیر دفعہ 155C پولیس آرڈر 2002کے تحت درج کیا گیا ہے یاد رہے کہ چک نمبر375ج ب ٹوبہ ٹیک سنگھ کے غلام صابر کی بیٹی ریحانہ کوثر کی شادی تقریبا 8 سال قبل گوجرہ کے نواحی چک نمبر 367ج ب جلیانوالہ کے محمد عباس کے ساتھ ہوئی تھی میاں بیوی کے مابین نا چاقی پیدا ہو گئی جس پر خاتون ریحانہ کوثر نے اپنے خاوند کے گھر آباد ہونے سے معذوری ظاہر کر دی اور میکے چلی گئی اس کے خاوند محمد عباس نے مصالحت کیلئے تھانہ صدر گوجرہ کے ایک تھانیدار اسسٹنٹ سب انسپکٹر محمد نوید کی خدمات حاصل کر لیں،تھانیدار مذکور نے خاتون ریحانہ کو ثر کے بھائی فاروق احمد کے گھر پر چھاپہ مار کر زبردستی اسے اغوا کر لیا اور تھانہ صدر گوجرہ لا کر اسے اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے غیر قانونی طور پر تھانہ ہذا کی حوالات میں بند کر دیا،محبوس کے والد غلام صابر نے تحریری طور پر ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر ٹوبہ ٹیک سنگھ وقار قریشی سے رجوع کیا،ڈی پی او ٹوبہ ٹیک سنگھ نے تھانیدارکی سرزنش کرتے ہوئے اس کی قید سے محبوس فاروق کو رہائی دلائی اور تھانیدار محمد نوید کے اس غیر قانونی اقدام کی انکوائری کا حکم دیا تھا۔صدر پولیس نے رہا کئے گئے فاروق احمد کو اس کے بھائی سمیت دوبارہ گرفتار کر کے چوری کے ایک مقدمہ میں جسمانی ریمانڈ حاصل کر لیا تھا اور مقامی جوڈیشل مجسٹریٹ نے دونوں کو مذکورہ مقدمہ سے ڈسچارج کر دیا ہے۔

تھانیدار فرار

مزید : علاقائی