” یہ مشکل ہے لیکن نا ممکن نہیں “خاتون پولیس افسر کی ایسی تصویر سامنے آگئی کہ ہرپاکستانی داد دینے پر مجبور ہوگیا

” یہ مشکل ہے لیکن نا ممکن نہیں “خاتون پولیس افسر کی ایسی تصویر سامنے آگئی کہ ...
” یہ مشکل ہے لیکن نا ممکن نہیں “خاتون پولیس افسر کی ایسی تصویر سامنے آگئی کہ ہرپاکستانی داد دینے پر مجبور ہوگیا

  



شیخوپورہ(ڈیلی پاکستان آن لائن)پنجاب پولیس کو ناروارویہ اپنانے پر اکثر اوقات تنقید کا نشانہ بنایا جاتا ہے لیکن اس میں کچھ پولیس آفسیرز ایسے بھی ہیں جو نہ صرف اپنی ذمہ داریاں پوری ایمانداری سے نبھاتے ہیں بلکہ مشکل کے باوجود اپنے فرائض کی انجام دہی کو یقینی بناتے ہیں۔

پنجاب پولیس کی اے ایس پی عائشہ بٹ نے بھی فرض اور ذمہ داری کو اکٹھے ادا کر کے ایک اعلیٰ افسر ہونے کا ثبوت دیا ہے۔یہ تصویر گزشتہ روز تھانہ فیروز والا میں ہونے والی کھلی کچہری کی ہے جہاں سائلوں کو سن کر ان کی داد رسی کی گئی۔

تصویر کے ساتھ اے ایس پی عائشہ بٹ نے ٹیگ کیا ہے کہ یہ کام مشکل ہے لیکن ناممکن بالکل بھی نہیں ہے۔

 جیو نیوز کے مطابق اے ایس پی عائشہ بٹ کے شوہر اے ایس پی عبدالوہاب خان اسلام آباد پولیس میں ڈیوٹی انجام دے رہے ہیں۔

سوشل میڈیا پر اس حوالے سے ملا جلا ردعمل دیکھنے کو ملا۔۔سید بلال نامی ایک صارف نے لکھا”کوئی ان سے کہو کہ کچھ سندھ پولیس کو بھی سکھا دیں... یہ عظیم افسر دو کام ایک ساتھ نبھا رہی ہیں اور ہمارے والے ایک نہیں کر پاتے...“

پی ایم ایل این سیالکوٹ نام سے ٹویٹر چلانے والے ایک صارف نے لکھا کہ” معزرت مگر یہ آپ کے ذاتی کاموں میں شمار ہوتا ہے دوران ڈیوٹی یہ رویہ درست نہیں اگر مجبوری ہو تو بچی کی آیا کو ساتھ لایا کریں ورنہ میاں بیوی مل کر مینج کریں خاتون ہونے یا ماں ہونے پر ہمدردی سمیٹنا غلط ہے سرکار آپکو تنخواہ کام کی دیتی ہے“

کاشف جنید نے لکھا”میڈم یہ انتہائی غیرمناسب ہے،بہتر ہے کہ آپ چند ماہ کی رخصت لے لیں وگرنہ سارا دن مختلف قماش کے لوگوں کی شکلیں دیکھنا بچی کے لیے درست نہیں اور نظربد کا مسئلہ بھی۔۔۔۔۔۔۔

انہوں نے مزید لکھا کہ بہرحال اللہ تعالی اس ننھی پری کو آپ کی آنکھوں کی ٹھنڈک اور صالحہ بنائے،آمین“

مزید : ڈیلی بائیٹس