قرآن کریم کی بے حرمتی عالمی اَمن کے لیے خطرناک ،عالمی سطح پر قانون سازی کے لئے اسلامی ممالک کردار ادا کریں:وفاق المدارس العربیہ

قرآن کریم کی بے حرمتی عالمی اَمن کے لیے خطرناک ،عالمی سطح پر قانون سازی کے ...
قرآن کریم کی بے حرمتی عالمی اَمن کے لیے خطرناک ،عالمی سطح پر قانون سازی کے لئے اسلامی ممالک کردار ادا کریں:وفاق المدارس العربیہ

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)ناروےمیں قرآنِ کریم کونذرِآتش کرنے کی کوشش حیران کن اورافسوسناک ہے,قرآن کریم کی بےحرمتی عالمی امن کے لیےخطرناک ہے,عالمی سطح پر تمام مذاہب کی مقدس شخصیات اور شعائر کے تقدس کا قانون بنایا جائے,ناروے پولیس اگر قرآن جلانے والے کو کھلی چھوٹ نہ دیتی تو ایک نوجوان کو از خود اقدام کی ضرورت نہ پیش آتی,عالمی سطح پر توہین کو روکنے کے لیے قانون سازی کی ضرورت ہے او آء سی اور پاکستان سمیت دیگر اسلامی ممالک اس سلسلے میں کردار ادا کریں اور اس نوجوان کی رہائی کے لیے کردار ادا کریں۔

تفصیلات کےمطابق وفاق المدارس العربیہ پاکستان کےرہنماؤں مولاناڈاکٹرعبدالرزاق سکندر,مولانا انوارالحق,مولانا مفتی محمد رفیع عثمانی اورمولانا محمدحنیف جالندھری نے اپنےایک مشترکہ بیان میں کہاکہ ناروے میں قرآن کریم کونذرِآتش کرنے کی کوشش افسوس ناک اور قابلِ مذمت ہے،ہمارےلیےیہ اَمرحیران کن ہےکہ ناروے جیسے ملک میں اِس قسم کی اشتعال انگیزی کی کھلی چھوٹ کیسے دی گئی؟اِس قسم کےواقعات عالمی اَمن کے لیے خطرے کی گھنٹی ہے۔وفاق المدارس کے قائدین نے  کہا کہ اگر پولیس کی طرف سے اپنی نگرانی میں قرآن کریم کو نذر آتش کرنے کا موقع نہ دیا جاتا تو اِس نوجوان کو بھی ایسے اقدام کی ضرورت نہ پڑتی،پولیس نے ایکشن کے بجائے ری ایکشن پر ایکشن لیا،اگر پہلے ہی ایکشن لے لیا جاتا تو نوبت یہاں تک نہ آتی ۔وفاق المدارس کے قائدین نےکہاکہ آئے روز کےواقعات اِس بات کا احساس دلانے کے لیے کافی ہیں کہ قوانین اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کےذریعے گستاخانہ طرزِ عمل کو روکا جائے اورآزادی اِظہار اورتوہین کے مابین فرق واضح کیا جائے،او آئی سی اور اسلامی ممالک کےدیگرفورم اِس حوالے سےکرداراداکریں اور اِس نوجوان کی رہائی کےلیےکرداراداکریں۔

مزید : علاقائی /اسلام آباد