فارن فنڈنگ کیس کے پاکستان کی سیاست پر دور رس اثرات مرتب ہو سکتے ہیں: اکبر ایس بابر

فارن فنڈنگ کیس کے پاکستان کی سیاست پر دور رس اثرات مرتب ہو سکتے ہیں: اکبر ایس ...
فارن فنڈنگ کیس کے پاکستان کی سیاست پر دور رس اثرات مرتب ہو سکتے ہیں: اکبر ایس بابر

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان تحریک انصاف کے خلاف فارن فنڈنگ کے درخواست گزار اکبر ایس بابر نے کہا کہ اِس کیس کے پاکستان کی سیاست پر دور رَس اَثرات مرتب ہو سکتے ہیں،یہ کیس پانچ سالوں سے سنا جا رہا ہے،اِس کا15 دنوں میں کیا فیصلہ ہوسکتا ہے،اِس کیس کی الیکشن کمیشن میں70سے زیادہ سماعتیں ہو چکی ہیں،21کےقریب آرڈر پاس ہوئے،تحریک انصاف اپنا ریکارڈ جمع کرائے،پاکستانی شہری سیاسی جماعت کی فنڈنگ کر سکتا ہے،میرا شروع سے موقف ہے کہ تمام سیاسی جماعتوں کو قانون کے دائرے میں لایا جائے اور بادشاہت سے آزاد کرایا جائے۔

تفصیلات کے مطابق تحریک انصاف کے خلاف فارن فنڈنگ کے درخواست گزار اکبر ایس بابر نے کہا کہ اس کیس کا15 دنوں میں کیا فیصلہ ہوسکتا ہے،2016 میں الیکشن کمیشن نے پی ٹی آئی کو کہا کہ تمام ثبوت پیش کئے جائیں ورنہ آپ کے خلاف قانونی کارروائی ہو سکتی ہے ،اِس پر عمران خان نے الیکشن کمیشن کو خط لکھا جس پر الیکشن کمیشن نے کہا کہ اس خط کی زبان توہین آمیز ہے، جس پر عمران خان نے الیکشن کمیشن سے معافی بھی مانگی تھی۔اُنہوں نے کہا کہ اس کیس کی 7 رٹ پیٹیشن ہو چکی ہیں،ساتویں رٹ پیٹیشن میں تحریک انصاف کی طرف سے یہی کہا گیا کہ سیکروٹنی کمیٹی کو روکا جائے۔اکبر ایس بابر نے کہا کہ ہمیں بتایا جائے کہ سیکروٹنی کمیٹی کو کیوں روکا جائے؟ آپ کے تمام ثبوت آڈٹ شدہ ہیں، آپ کے کوئی معاملات خراب نہیں،جب یہ سیکروٹنی کمیٹی بنی تو اس کو ایک ماہ میں شواہد پیش کرنے کا کہا گیا تھا لیکن تحریک انصاف نے ان کو معلومات فراہم نہ کیں اور سیکرونٹی کمیٹی کی مدت بڑھائی جاتی رہی۔ اُنہوں نے کہا کہ پاکستانی شہری سیاسی جماعت کی فنڈنگ کر سکتا ہے لیکن غیرملکی کمپنی، غیر ملکی شہری یا جماعت فنڈنگ نہیں کرسکتا،تحریک انصاف نے جو ریکارڈ الیکشن کمیشن میں پیش کیا اس میں غیر ملکی شہریوں اور کمپنیوں کی فنڈنگ ظاہر ہوتی ہے۔ اُنہوں نے اپنے اکاؤنٹس بھی چھپائے،جن اکاؤنٹس میں لا کھوں ڈالر کی فنڈنگ ہوئی وہ الیکشن کمیشن سے چھپائے گئے،23 اکاؤنٹس میں سے صرف8اکاؤنٹس سامنے لائے گئے ہیں،میرا شروع سے موقف ہے کہ تمام سیاسی جماعتوں کو قانون کے دائرے میں لایا جائے اور بادشاہت سے آزاد کرایا جائے، پی ٹی آئی میں ممنوعہ فارن فنڈنگ میگاکرپشن معاملہ ہے،تحریک انصاف میں بادشاہت ختم کی جائے،جزا سزا کا قانون لاگوہو،عمران خان نے مجھ سے کہاتھا میں راستے سے ہٹ جاؤں توسامنے آجانا۔

مزید : علاقائی /اسلام آباد