کاپی رائٹ ایکٹ کی خلاف ورزی پر البرہان پبلشرز کو ہرجانے کا نوٹس

کاپی رائٹ ایکٹ کی خلاف ورزی پر البرہان پبلشرز کو ہرجانے کا نوٹس

لاہور (پ ر) دینی علوم اور مذاہب عالم محقق اور ادارہ مکتبہ اخوت کے مہتمم علامہ محمد علی فارق کے وکیل محمد اقبال محمد نے البرہان پبلشر اردو بازار لاہور پروپرائٹر وسیم شہزاد اور مہتمم محمد طارق جاوید اور پنجاب یونیورسٹی شعبہ امتحانات کے رشید احمد صدیقی کو کاپی رائٹ آرڈیننس 1962ءاور کاپی رائٹ رولز 1967ءکے تحت ہرجانے کے نوٹس جاری کرتے ہوئے ان سے 15یوم کے اندر اندر ہرجانہ طلب کرلیا ہے۔ علامہ محمد علی فاروق کے وکیل محمد اقبال محمد نے اس نوٹس میں موقف اختیار کیا ہے کہ میرے موکل فتوح شام نامی کتاب کی بڑی عرق ریزی سے تحقیق وتصحیح کی لیکن البرہان پبلشرز کے پروپرائٹر نسیم شہباز اور مہتمم محمد طاروق جاوید نے کتاب کمپوزر رشید احمد صدیقی سے ساز باز کرکے مسودے چرا کر البرہان پبلشرز کے تحت شائع کرکے اس کی فروخت شروع کردی نوٹس میں کہا گیا ہے اگر 15 یوم کے اندر اندر میرے موکل کے نقصان کا ازالہ نہ کیا گیا تو مسﺅل علیہان کے خلاف کاپی رائٹ آرڈیننس اور رولز اور فوجداری اور دیوانی قانون کی اس کھلی خلاف ورزی پر قانونی کارروائی کی جائے گی۔

مزید : میٹروپولیٹن 1