تشدد کی راہ چھوڑ کرامن کی ضمانت دینے والوں کیساتھ مذاکرات کیلئے تیارہیں:حیدر ہوتی

تشدد کی راہ چھوڑ کرامن کی ضمانت دینے والوں کیساتھ مذاکرات کیلئے تیارہیں:حیدر ...

صوابی (بیورورپورٹ)خیبرپختونخوا کے وزیر اعلیٰ امیرحیدر خان ہوتی نے دو ٹوک الفاظ میں کہا ہے کہ تشدد کی راہ چھوڑ کر امن کی ضمانت دینے والوں کے ساتھ مذاکرات کے لئے تیار ہیںبصورت دیگر انسانیت، اسلام اور بھائی بندی کی درخواست نہ ماننے والے دہشت گردوں کے خلاف آخری دم تک جہاد جاری رکھیں گے۔ بز دلانہ حملوں سے خوفزدہ نہیں ہوں گے۔دہشت گردی اور سیلاب کی آزمائشوں کے باوجود اے این پی اپنی سیاست میں سرخرو ہو چکی ہے اور ترقیاتی کاموں میں سب سے آگے ہے ۔اُنہوں نے یہ بات پیر کے روز صوابی کے ایک روزہ دورہ کے موقع پر صوابی ٹوپی روڈ ، صوابی جہانگیرہ روڈ اور صوابی گرڈ سٹیشن میں نصب شدہ 40MVA پاور ٹرانسفارمر کا افتتاح کرنے کے بعد عوامی اجتماع سے خطاب کر تے ہوئے کہی۔ اس موقع پر اے این پی کے ضلعی صد ر حاجی رحمان اﷲ، صوبائی وزیر زرشید خان، مقامی تنظیمیوں کے عہدیداران کارکن ، معززین علاقہ کثیر تعداد میں موجود تھے۔ وزیرا علیٰ نے صوابی میں کروڑوں روپے مالیت کی نئی سکیمیوں کا بھی اعلان کیا جن پر عملی کام جلد شروع کر دیا جائے گا۔ اُنہوں نے صوابی کے عوام کو خوشخبری دی کہ وہ عنقریب صوابی کے لئے ایک بہت بڑے میگا پراجیکٹ کا اعلان کریں گے جو صوابی کے روشن مستقبل کی ضمانت ثابت ہو گا۔۔ آج صوابی میں ہونے والے موٹر سائیکل بم دھماکے کی مذمت ر کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ نے کہا کہ مجھے ذمہ دار لوگوں نے مشورہ دیا کہ آپ جلسہ منسوخ کرکے واپس پشاور چلے جائیں جس پر اُنہوں نے کہا کہ پنڈال میں انتظا ر کرنے والے بزرگوں اور کارکنوں کو چھوڑ کر واپس چلے جانا ایک غیر ت مند پختون کے شایان شان نہیں ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ ہمیں دہشت گردی کی آزمائش کا سامنا ہے ۔ ایسے بزدلانہ حملے ہمارے حوصلوں کو پست نہیں کر سکتے آئے روز پولیس اہلکار ، ہمارے بزرگ ، بچے ، خواتین دہشت گردی کے واقعات میں شہید او ر خمی ہو رہے ہیں ۔ وہ بھی ہمارے بچے ، ہمارے بزرگ اور ہماری مائیں بہنیں ہیں ۔ اُنہوں نے کہا کہ دھماکے اور خود کش حملے کرنے والے اس سرزمین ، ترقی اور امن کے دشمن ہیں جو انسان اور مسلمان کہلانے کے مستحق نہیں۔اُنہوں نے کہا کہ وہ لوگ جنہیں اپنی سرزمین ، وطن اور امن کے خلاف گمراہ کیا گیا ہے اگر تشدد کی راہ ترک کردیں اور امن کی ضمانت دیں اُن کے ساتھ مذاکرات کے لئے تیار ہیں چاہے اُن کا تعلق کسی رنگ و نسل سے ہو لیکن بزرگوں، بچوں ، ماﺅں اور بہنوں پر مظالم کرنے والوں کے خلاف با چا خان کے سپاہی اور پختون قوم کا فرد ہونے کے ناطے آخری دم تک جہاد جاری رکھیں گے اُنہوں نے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف باچا خان کے دیوانے پیروکاروں نے اپنے سر داﺅ پر لگا رکھے ہیں۔وزیر اعلیٰ نے اپیل کی کہ آج جو لو گ قوم پرستی کی سیاست لیپٹ کر دوسری جماعتوں میں چلے گئے ہیں وہ باچا خان کی فکر ، جدوجہد اور وطن سے محبت اور قوم کی خدمت کی راہ پر چلنے والے اسفندیار ولی خان کی زیر قیادت سرخ جھنڈے تلے جمع ہو جائیں کیونکہ قوم پرستی اسی خا نوادے کی میر اث ہے۔صوابی میں ترقیاتی سکیموں پر روشنی ڈالتے ہوئے وزیراعلیٰ نے کہا مردان صوابی روڈ، پار ہوتی یار حسین روڈ پر کام تکمیل کے آخری مراحل میں ہے۔ پولیس لائن اور جیل کی تعمیر نو پر کام جاری ہے۔ انہوں نے بدری نالہ پنج پیر پر متاثرہ پل کی دوبارہ تعمیر ، کاذ وے کی تعمیر ، 6کلو میٹر ترلاندی روڈ اور 5کلو میٹر طویل نیترہ غند شیر درہ روڈ کی تعمیر کا اعلان کیا جن پر مجموعی طور پر 34کروڑ روپے سے زائد لاگت آئے گی۔ انہوں نے آبنوشی کی 8سکیموں کےلئے 26کروڑ روپے کی منظوری بھی دی۔ اُنہوں نے کہا کہ گزشتہ تقریباً پانچ سالوں کی عوامی خدمت آخری نہیں بلکہ شروعات ہے آنے والا دور بھی سرخ جھنڈے کا ہے ۔اے این پی کی مقبولیت اور جڑیں آج جنوبی اضلاع ہزارہ اور کوہستان تک پھیل چکی ہیں۔وزیر اعلیٰ نے کہا کہ عوام کی منتخب حکومت نے انتہا پسندی اور سیلاب کی آزمائشوں سے گزرنے کے باوجود صوبے کی ترقی کا عمل زور و شور سے جاری رکھا ہے ۔آج ملک میں اے این پی واحد سیاسی جماعت ہے جو اپنی سیاست، انتخابی منشور اور اپنے وعدوں پر عمل کر کے سیاسی فاتح بن چکی ہے وطن کی بقاءکی جدوجہد کے ساتھ ساتھ ترقیاتی کاموں میں بھی سب سے آگے ہے۔وزیر اعلیٰ نے کہا کہ گرڈ سٹیشن میں ٹرانسفار مر کی منظوری پر یہاں کی سیاسی جماعتوں نے خوب سیاست چمکائی ہے مگر حقیقت کبھی چھپ نہیں سکتی آج عوام خود دیکھ لیں کہ ٹرانسفار مر کی تنصیب کس کی کاﺅ شوں کا ثمر ہے اُنہوں نے کہا کہ ہم نے صوابی میں اعلان کر دہ ترقیاتی منصوبوں پر عمل کر کے دکھا دیا ہے۔سیاست میں منافقت باچا خان کے پیروکاروں کا کبھی شیوہ نہیں رہی۔صوبے کے نام کی تبدیلی ، بجلی کے خالص منافع کا حصول، این ایف سی ایوارڈ ، صوبائی خود مختار ی کے حصول کے علاوہ صوبائی حلقوں میں ترقیاتی کاموں کے لئے 65 کروڑ روپے کے ترقیاتی پیکج پر عمل درآمد اس حقیقت کا ثبوت ہے کہ اے این پی نعروں کی بجائے عمل کی سیاست پر یقین رکھتی ہے انہوں نے کہ گرڈ سٹیشن میں 40MVA پاور ٹرانسفارمر کی تنصیب سے صوابی میں لوڈ کی وجہ سے لوڈ شیڈنگ نہیں ہو گی۔امیرحیدر خان ہوتی نے کہا کہ کوٹھا بائی پاس روڈ کی تعمیر سے ہری پور تک سفری سہولیات میں آسانی پیدا ہو گی ۔اُنہوں نے کہا کہ ترقی کے لئے تعلیم ، روزگار ، زراعت اور دیگر شعبوں کے علاوہ سڑکوں کی اہمیت اور افادیت مسلمہ ہے ۔اُنہوں نے کہا کہ گدون امازئی اُتلا روڈ کی تعمیر سے علاقے میں سیاحت کو فروغ ملے گا اور یہ علاقہ مو سم گرما میں ملک اور بیرون ملک سے سیاحوں کی توجہ کا مرکز بنے گا۔اُنہوں نے کہا کہ ترقیاتی منصوبے شلغم نہیں جنہیں جیب میں رکھا جائے مخالفین کو پایہ تکمیل کو پہنچنے والے منصوبے نظر نہیں آر ہے۔اُنہوں نے کہا کہ یہ منصوبے صوابی کی تعمیر و تر قی اور روشن مستقبل کی ضمانت ثابت ہو ں گے۔وزیر اعلیٰ نے صوابی کے خدائی خدمتگاروں ، کارکنوں اور پارٹی قیاد ت کو خراج تحسین پیش کر تے ہوئے کہا کہ گزشتہ ساڑھے چار سال کے دوران اے این پی کی کامیابیاں فرد واحد نہیں بلکہ باچا خان کی سوچ و فکر ،کا رکنوں کی محنت اور سرخ جھنڈے کی برکات ہیں۔ ہم نے باچا خان بابا ، ولی خان اور اُن کے ساتھیوں کے تمام ارمان پورے کر دیئے ہیں جن کی خاطر اُنہوں نے قید و بند کی صعوبتیں برد اشت کیں۔ جلسہ سے صوبائی وزیر زرشید خان ، حاجی تمریز نے بھی خطاب کیا۔

مزید : صفحہ آخر