بادامی باغ لین دین تنازع پر دو گروپوں میں فائرنگ 2 راہگیر جاں بحق 4 زخمی

بادامی باغ لین دین تنازع پر دو گروپوں میں فائرنگ 2 راہگیر جاں بحق 4 زخمی

                 لاہور( بلال چودھری)بادامی باغ کے علاقہ میں لین دین کے تنازع پر دو گروپوں کے درمیان فائرنگ کے تبادلہ میں2 راہگیر جاں بحق جبکہ 4 شدید زخمی ہو گئے۔ بیشترملزمان موقع سے فرار ہونے میں کامیاب ہو گئے۔پولیس نے مقامی افراد کی اطلاع پر موقع پر پہنچ کر ایک ملزم کو گرفتار کر لیا جبکہ نعشوں کو پوسٹ مارٹم کے لیے مردہ خانہ میں جمع کروا دیاہے ۔ریسکیو ٹیم نے بھی موقع پر پہنچ کر زخمیوں کو طبی امداد کے لیے قریبی ہسپتال میں منتقل کر دیا ہے جہاں ان کی حالت نہایت تشویشناک بتائی جاتی ہے۔پولیس کے مطابق چاہ موتیاں داتا نگر بادامی باغ کے علاقہ میں واقع شیر شاہ روڈ عثمان چوک پر گزشتہ رات 11بجے کے قریب زاکر شاہ گروپ اورارشد گروپ کے مابین متنازع زمین کے معاملے پرزاکر شاہ گروپ کے سرغنہ زاکر شاہ کی عثمان چوک پر واقع پراپرٹی ڈیلر کی دکان میںگزشتہ رات فیصلہ ہونا تھا لیکن دونوں پارٹیوں میں موقع پر تلخ کلامی ہو گئی اور دونوں جانب سے ہتھیاروں کا استعمال ہونے لگ پڑا۔زاکر گروپ کے 3افراد سرغنہ سمیت دکان کی چھت پر چڑھ گئے اور بازار میں مختلف دکانوں میں پناہ لیے ہوئے ارشد گروپ کے افراد پر فائرنگ کرتے رہے۔ فائرنگ کے تبادلہ میں5راہگیر شدید زخمی ہو گئے ۔اسی دوران مقامی افراد نے پولیس کو اطلاع دی جس پر پولیس فوری موقع پر پہنچ گئی پولیس کے آنے پر دونوں گروپوں کے افراد موقع سے فرار ہو گئے پولیس اہلکاروں نے زاکر گروپ کے سرغنہ زاکر شاہ کو موقع سے معمولی زخمی حالت میں گرفتار کر لیا جبکہ زخمی راہگیروں میں سے دو راہگیر موقع پر ہی جاں بحق ہو گئے پولیس کی جانب سے کال کرنے پر ریسکیو 1122نے موقع پر پہنچ کر زخمیوں کو میو ہسپتال میں منتقل کیا جن میں سے دو زخمیوں کی حالت نہایت تشویشناک بتائی جاتی ہے۔پولیس نے جائے وقوعہ سے شواہد اکٹھے کر کے جاں بحق ہونے والے افراد کی نعشیں پوسٹ مارٹم کے لیے مردہ خانہ میں جمع کروا دی ہیں جاں بحق ہونے والوں سے ایک راہگیر کا نام فاروق ہے جو کہ 18سال کا ہے اور بارہویں جماعت کا طالب علم بتایا جاتا ہے جو کہ اپنے بھائی 14سالہ سمیر کے ساتھ دودھ لینے آیا تھا ۔ دونوں بھائی بادامی باغ کے علاقہ حسین پارک گلی نمبر 11کے رہائشی ہیں واقع میں سمیر کو بازو پر گولی لگی ہے اور اس کی حالت خطرے سے باہر بتائی جاتی ہے ۔ دوسرے جاں بح± ہونے والے راہگیر کا نام عمیر بتایا جاتا ہے جو کہ محلہ حنیف پارک بادامی باغ کا رہائشی ہے ۔ واقع کے بعد مقتولین کے ورثا نے عثمان چوک کو مکمل طور پر بلاک کر دیا اور پولیس اور ملزمان کے خلاف شدید نعرے بازی کی ۔اس کے علاقہ ٹائر جلا کر سڑک پر دھرنا بھی دیئے رکھا ۔ احتجاج کی اطلاع ملنے پر پولیس حکام بھاری نفری کے ساتھ جائے وقوعہ پر پہنچ گئے ۔ اور رات کو 3بجے کے قریب پولیس کی جانب سے ملزمان کی گرفتاری کی یقین دہانی اور انصاف کی فراہمی کے وعدے کے بعد مظاہرین منتشر ہو گئے۔اس موقع پر مظاہرین نے نمائندہ" پاکستان" سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہدونوں گروپوں کے مابین پہلے بھی کئی بار ایسے ہی فائرنگ کا تبادلہ ہو چکا ہے اور ہم نے پولیس کو اس حوالے سے ایکشن لینے کا کہا تھا لیکن پولیس کی جانب سے کوئی کارروائی نہ کیے جانے کی وجہ سے آج یہ سانحہ رونما ہوا ہے۔

مزید : صفحہ آخر