فصل اجاڑنے سے منع کرنے پر مسلح افراد کا نوجوان پر تشدد اہل خانہ کا احتجاجی مطاہرہ

فصل اجاڑنے سے منع کرنے پر مسلح افراد کا نوجوان پر تشدد اہل خانہ کا احتجاجی ...

                گوجرانوالہ( بےورورپورٹ) فصل اجاڑنے سے منع کرنے پر بااثر مسلح افراد کا نوجوان پر وحشیانہ تشدد ‘اہلخانہ کا احتجاجی مظاہرہ ‘روڈ بلاک ‘مقامی پولیس کیخلاف شدید نعرے بازی ‘اعلی حکام سے نوٹس لینے کا مطالبہ۔تفصیلات کے مطابق نواحی علاقہ بیگہ بانیاں کے رہائشی محنت کش نادر خان عرصہ دراز سے علاقہ میں کاشت کاری کرتا ہے چند ماہ قبل محنت کش نادر خان کی اراضی پر علاقہ کے بااثر افراد اشرف وغیرہ نے اپنے مویشی داخل کر کے سات ایکڑ اراضی پر کاشت فصل گندم تباہ کر دی۔ اراضی کے مالک نادر خان کی درخواست پر مقامی پولیس نے اشرف سمیت متعدد افراد کیخلاف مقدمہ درج کر لیا۔ مقامی پولیس کے تفتیشی افسر افضل بیگ نے بااثر ملزمان سے ملی بھگت کر کے محنت کش نادر خان کی مدعیت میں درج ہونیوالی ایف آئی آر کو خارج کرتے ہوئے الٹا ملزم اشرف کی مدعیت میں نادر خان اور اس کے بیٹوں کیخلاف بے بنیاد مقدمہ درج کرتے ہوئے گرفتار کر لیا اور جرم ثابت کر کے محنت کش نادر اور اس کے بیٹوں کو جوڈیشل کر دیا۔ دو ماہ کے عرصہ گزرنے کے بعد عدالت نے ضمانت پر نادر خان اور اس کے بیٹوں کو رہا کر دیا ۔ مگر علاقہ کے بااثر افراد اشرف وغیرہ نے سابقہ رنجش دل میں رکھتے ہوئے محنت کش نادر خان کے بیٹے عمران کو گھر آتے ہوئے راستہ میں روک کر اشرف ‘بنارس ‘شان علی ‘زوہیب پانچ افراد نے بدترین وحشیانہ تشدد کرتے ہوئے سر میں اینٹیں اور پستول کے بٹ مار مار کر شدید تشدد کا نشانہ بنایا۔ عمران کی حالت غیر ہونے پر پانچوں ملزمان للکاریں مارتے ہوئے موقع سے فرار ہو گئے ۔ عمران کو طبی امداد کیلئے مقامی ہسپتال منتقل کر دیا گیا۔ زخمی عمران کے والد نادر خان کی مدعیت میں کنجاہ پولیس نے پانچ افراد سمیت متعدد ملزمان کیخلاف مقدمہ درج کر لیا مگر مقدمہ درج ہونے کے کئی روز گزر جانے کے باوجود پولیس ابھی تک کسی ملزم کو گرفتار نہیں کر سکی ۔ جس کیخلاف زخمی عمران کے اہلخانہ سمیت علاقہ کے درجنوں افراد نے احتجاج کیا اور میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے نظر حسین ‘سفیان ‘مظہر اقبال ‘خرم ‘اشرف ‘افضال ‘علی رحمان وغیرہ نے بتایا کہ ملزم اشرف وغیرہ علاقہ کے بااثر افراد ہیں جنہوں نے اس سے پہلے بھی پولیس سے ساز باز کر کے کئی غریبوں کی زمینوں پر قبضہ کر رکھا ہے ۔ اور علاقے میں دہشت کی علامت بنے ہوئے ہیں اور ملزمان بااثر ہونیکی وجہ سے مدعی مقدمہ کو سنگین نتائج کی دھمکیاں دیتے ہیں ۔ مدعی مقدمہ نے اپیل کی ہے کہ ہمارے نامزد ملزمان کو فی الفور گرفتار کر کے کیفر کردار تک پہنچایا جائے اور ہمارے مقدمے کی تفتیش تبدیل کر کے کسی اعلی ایماندار افسر کے سپرد کی جائے اور ہمارے اہلخانہ کو بااثر ملزمان سے تحفظ فراہم کیا جائے ۔

مزید : علاقائی