جماعت اسلامی بنگلہ دیش کے سابق امیر پروفیسر غلام اعظم انتقال کر گئے

جماعت اسلامی بنگلہ دیش کے سابق امیر پروفیسر غلام اعظم انتقال کر گئے
جماعت اسلامی بنگلہ دیش کے سابق امیر پروفیسر غلام اعظم انتقال کر گئے

  

ڈھاکہ(مانیٹرنگ ڈیسک)جماعت اسلامی بنگلہ دیش کے سابق امیر اور 1971میں پاکستان کی جنگ لڑنے والے پروفیسر غلام اعظم بنگلہ دیش کے قید خانے میں زندگی کی قید سے آزادہو گئے۔پر وفیسر غلام اعظم کو بنگلہ دیش کی نام نہاد عدالت انٹر نیشنل کرائم ٹربیونل نے 15 جولائی 2013کو 1971میں پاکستان کی حمایت کرنے اور بنگلہ دیش کی نام نہاد تحریک آزادی کی مخالفت کرنے پر 90سال کی قید سنائی تھی۔ٹربیونل کاکہنا تھا کہ پروفیسر غلام اعظم سزائے موت کے مستحق ہیں تاہم انہیں انکے بڑھاپے اور بیماری کے باعث یہ سزانہیں سنائی گئی۔ پروفیسر غلام اعظم 7نومبر1922 کو بنگال میں پیداہوئے تھے۔وہ مولانا غلام کبیر کے سب سے بڑے صا حبزادے تھے۔ انہوں نے ابتدائی تعلیم اپنے آبائی علاقہ کے مدرسہ سے حاصل کی جبکہ میٹر ک ڈھاکہ سے کیا۔انہوں نے بیچلر اور ماسٹرز کی ڈگری ڈھاکہ یونیورسٹی سے حاصل کی۔ دریں اثناءجماعت اسلامی لاہور کے امیر میاں مقصود نے پر وفیسر غلام اعظم کے انتقال کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ پروفیسر غلام اعظم کی غائبانہ نما ز جنازہ بعد از ظہر مسجد شہداءمیں ادا کی جائیگی۔

مزید :

بین الاقوامی -