پی ایس اے کے تحت کسی بھی شخص کو عدالتی کارروائی کے بغیر ایک سال جیل میں رکھا جاسکتا ہے

پی ایس اے کے تحت کسی بھی شخص کو عدالتی کارروائی کے بغیر ایک سال جیل میں رکھا ...

سری نگر(کے پی آئی) مقبوضہ کشمیر میں پبلک سیفٹی ایکٹ پی اایس اے کے تحت کسی بھی شخص کو عدالتی کارروائی کے بغیر ایک سال جیل میں رکھا جاسکتا ہے ۔ پی ایس اے کے تحت سینکڑوں کشمیری جیلوں میں بند ہیں۔ وانپورہ کیموہ میں عاطفہ تبسم کے افراد خانہ اس کی شادی کی تقریب ملتوی کرنے پر مجبور ہوئے ہیں کیونکہ اس کے والد پر گذشتہ ہفتہ دوسری مرتبہ پی ایس اے لگایا گیا۔

اور انہیں جیل سے رہا نہیں کیا گیا ۔اگر چہ عدالت نے اس پر لگائے گئے پی ایس اے کوکالعدم کیا تھا تاہم اس کے باوجود اس کی رہائی عمل میں نہیں لائی گئی جس کی وجہ سے اس کنبے کو اپنی بیٹی کی شادی کی تقریب ملتوی کرنی پڑی ۔عاطفہ جو کہ تحریک حریت کے ضلع صدر کولگام محمد سبحان ڈار عمر62سال ساکن وانپورہ کی بڑی بیٹی ہے ،کی شادی اتوار کو تھی اور افراد خانہ کو یقین تھا کہ محمد سبحان ڈارکو رہائی نصیب ہوگی کیونکہ عدالت نے گذشتہ ہفتے ہی اس کا پی ایس اے کواش کیا تھا اور اسے سنٹرل جیل سے سی آئی کے نے اپنی تحویل میں لے لیا ۔محمد سبحان کو گذشتہ برس 9نومبر کوپی ایس سے کے تحت گرفتار کیا گیا اور بعد میں کوٹ بلوال جیل جموں منتقل کیا ۔جون 2017میں اس کا پی ایس اے کواش ہوا تاہم اسے رہا کرنے کے بجائے اس پر دوسرا پی ایس اے لگایا گیا ۔بعد میں اگست کے مہینے میں اسے سنٹرل جیل سرینگر شفٹ کیا گیا۔افراد خانہ کا کہنا ہے کہ احتجاجی مظاہروں میں شرکت کرنے پر محمد سبحان کے خلاف 23ایف آئی آر درج ہیں اور انہوں نے الزام لگایا کہ حکومت محمد سبحان کی نظر بندی طول دے رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ ایک کیس میں ضمانت لانے کے ساتھ ہی پولیس دوسرا کیس لے کر آتی ہے ۔ محمد سبحان کی اہلیہ نسیمہ اختر نے بتایا کہ عدالت نے پی ایس اے کو کواش کیا تھا جس کے بعد ہم نے شادی کی تاریخ طے کی تاہم اسے رہا نہیں کیا گیا جس کی وجہ سے شادی کی تقریب ملتوی کرنے پر مجبور ہوئے ۔26سالہ عاطفہ اس کی بڑی بیٹی ہے اور اس کی شادی آج یعنی22اکتوبر کو ہونے والی تھی تاہم شادی کی تقریب ملتوی کرنی پڑی ۔

مزید : عالمی منظر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...