حکومت اقتصادی راہداری پر کام کی رفتار نہ سست ہونے دے، پاکستان اکانومی واچ

حکومت اقتصادی راہداری پر کام کی رفتار نہ سست ہونے دے، پاکستان اکانومی واچ

اسلام آباد(صباح نیوز) پاکستان اکانومی واچ کے صدر ڈاکٹر مرتضیٰ مغل نے کہا ہے حکومت ملکی قسمت بدلنے والے منصوبے اقتصادی راہداری پر کام کی رفتار سست نہ ہونے دے اور ایسے عناصر کے خلاف کاروائی کرے جو جان بوجھ کر سیاسی مفادات کیلئے ملک و قوم کے مستقبل سے کھیل رہے ہیں۔ ملک میں جاری سیاسی عدم استحکام کو اس منصوبے پر اثر انداز نہ ہونے دیا جائے۔ ڈاکٹر مرتضیٰ مغل نے اپنے بیان میں کہا کہ قتصادی راہداری پاکستان کی قسمت بدلنے والا منصوبہ ہے اگراس کی منصوبہ بندی اور بروقت تکمیل میں کمی رہ گئی تو یہ ملکی معیشت کیلئے بہت بڑانقصان ہو گا۔اس منصوبے کے مخالفین کی بھرپور حوصلہ شکنی کی جائے، تمام اندرونی اور پیرونی سازشوں سے نمٹنے کیلئے فوری اقدامات کیئے جائیں۔ اس منصوبے کے تحت بننے والے بجلی گھر لگنے سے جہاں توانائی بحران ختم ہو گا وہیں ماحولیاتی چیلنجز سامنے آئیں گے جس سے نمٹنا ضروری ہے۔ سی پیک کی وجہ سے لاکھوں اسامیاں پیدا ہونگی ۔زیادہ تر اسامیاں چینی باشندوں کو ملنے کے خدشات بے بنیاد ہیں کیونکہ اس وقت تک ان منصوبوں میں نو ہزار چینی باشندوں کو نوکریاں ملی ہیں جبکہ پاکستانیوں کو تیس ہزار نوکریاں ملی ہیں جو وقت کے ساتھ بڑھ کر پانچ لاکھ سے زیادہ ہو جائیں گئی۔ اسی طرح چینی کمپنیاں خام مال بشمول سیمنٹ سریا اور دیگر سامان اپنے ملک سے درامد کرنے کے بجائے پاکستانی منڈی سے خرید رہی ہیں ، بجلی گھروں کیلئے کوئی قرضہ نہیں کیا گیا ۔ان بجلی گھروں سے پیدا ہونے والی بجلی کیلئے کوئی خصوصی ٹیرف بھی مقرر نہیں کیا گیا بلکہ ان سے پیدا ہونے والی بجلی کی قیمت وہی ہو گی جو ملک کے دیگر حصوں میں پیدا ہونے والی بجلی کی ہے۔

مزید : صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...