عمران کی تبدیلی جھوٹ ، میاں کی ترقی دھوکا : بلاول بھٹو

عمران کی تبدیلی جھوٹ ، میاں کی ترقی دھوکا : بلاول بھٹو

پشاور(سٹاف رپورٹر،مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں)پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو نے کہا ہے عمران خان بنی گالہ سے وزیراعظم ہاوس منتقل ہونے کیلئے ہر کام کو تیار ہیں،میاں صاحب کی ترقی دھوکا اور خان صاحب کی تبدیلی جھوٹ ہے،چار سال میں خیبرپختونخوا حکومت نے کوئی ہسپتال نہیں بنایا۔ ڈاکٹر ز ،نرسیں اور اساتذہ سب احتجاج کررہے ہیں،خیبرپختونخوا میں میگا کرپشن کی تحقیقات کیوں نہیں ہورہی؟ خیبر بینک اور مائننگ کے میگا اسکینڈل سامنے آئے، کہاں گیا پی ٹی آئی کا احتساب کمیشن؟دوسروں پر کرپشن کے الزا مات لگا کر خود کو فرشتہ ثابت کرنا چاہتے ہیں۔ گزشتہ روزپشاور میں این اے فور کے ضمنی الیکشن کے سلسلہ میں منعقدہ عوامی جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے بلاول بھٹو نے کپتان کو اڑے ہاتھوں لے لیااورکہا امپائر کی انگلی دیکھتے دیکھتے کپتان کی آنکھیں کمزور ہوگئی ہیں،وہ چاہتے ہیں کہ امپائر کی انگلی اٹھے اور وہ ناچنا شروع کر دیں۔ ترقی ملک نہیں شریف خا ندان اور انکے ساتھیوں کے اثاثوں میں آئی ہے۔پیپلزپارٹی کے چیئرمین پی ٹی آئی اور ن لیگ پر جم کربرسے اورکہا پی ٹی آئی اور ن لیگ کی حکومت نے سیاست کو گندا کردیا ہے۔ عمران خان کے پاس کوئی نظریہ نہیں ، ایسا شخص جسے اپنی زبان پر قابو نہیں وہ ملک کی رہنما ئی کیسے کرسکتاہے۔ نوے دن میں تبدیلی لانے کے دعویدار بتائیں وہ عوام کی زندگی میں کیاتبدیلی لائے؟ بلاول بھٹو نے کہا بلین ٹری منصوبے سے صوبے میں ہریالی نہیں آئی۔ سندھ میں ہسپتال اور ٹراما سینٹر بن رہے ہیں، جہا ں مفت علاج کیا جارہا ہے۔بلاؤل کاکہنا تھامیاں صاحب کی حکومت نے عوام کو صرف دھوکہ دیا ہے کوئی ایک طبقہ بتائیں جو انکی پالیسی سے خوش ہو۔ترقی سے غربت کم اور برآمدات بڑھتی ہیں ۔ پاکستان میں کسان،محنت کش ،ملازمین اور پینشنرز سمیت سب پریشان ہیں ۔ کسانوں کو ان کی فصلوں کی قیمت نہیں مل رہی۔ ملک میں ترقی ہونے کا جھوٹا دعویٰ کیا جارہا ہے ۔ سچ تو یہ ہے کہ ملک میں نہیں میاں صاحب کے اثاثوں میں ترقی ہورہی ہے۔ پچھلے 4 سال میں نون لیگ اور پی ٹی آئی نے اخلاقیات کا جنازہ نکال دیا ہے۔عوام کے سوچ سمجھ کر فیصلہ کرنے کا وقت آگیا ہے ۔ پشاور کے عوام کو چھبیس تاریخ کو گالم گلوچ کی سیا ست والوں کو شکست دینا ہے۔ پاکستان پیپلز پارٹی نے ہی این ایف سی ایوارڈ کے ذریعے صوبوں کو ان کا حق دلوایا۔ 18 ویں ترمیم کے ذریعے صوبوں کو ان کے جائز حقوق دلوائے اور عوام کی خواہش کے مطابق صوبے کا نام خیبر پختونخوا رکھا گیا۔ عمران خان خیبر پختونخوا کے عوام اور وسائل کو پنجاب کی سیاست کیلئے استعمال کر رہے ہیں۔ خیبر پختونخوا کے پیسو ں سے ہی عمران خان کا کچن اور جہانگیر ترین کا جہاز چلتا ہے اور سب الزامات میں نہیں بلکہ ان کے اپنے ہی ساتھیوں نے لگائے۔ عمرا ن خان جن لوگوں کو کرپٹ کہتے تھے آج وہی لوگ عمران خان کے ارد گرد کھڑے ہیں۔ خان صاحب کے اپنے ہی ساتھی کہہ رہے ہیں کہ تبدیلی کے نعرے لگاتے لگاتے پی ٹی آئی خود تبدیل ہو گئی ہے۔ میاں صاحب کی ترقی کے دعوے بھی کھوکھلے ہیں۔ عوام کا تو برا حال ہے البتہ شریف خاندان خوشحال ہو رہا ہے۔ دونوں نام نہاد بڑی جماعتیں آمروں کی گود میں پلی بڑھی ہیں اور ان کے رہنما پاکستان کو ترقی پسند نہیں بنانا چاہتے۔ یہ لوگ نہیں چاہتے دولت اوروسائل کی منصفانہ تقسیم ہو اور ملک ترقی کرے۔ دونوں جماعتیں ذاتی اقتدار کی سیاست کرتی ہیں جبکہ پیپلز پارٹی حقیقت میں عوام کی سیاست کرتی ہے اور ہم اقتدار میں آ کر حق داروں کو ان کا جائز حق دیں گے۔ انہوں نے این اے چار کے تمام مسائل کے حل کیے جانے کی یقین دہانی بھی کرائی۔

بلاول بھٹو

مزید : کراچی صفحہ اول