مظفرآباد،دوسری شادی کیلئے پہلی بیوی پر تشدد،بال اور بھنورے کاٹ دیئے

مظفرآباد،دوسری شادی کیلئے پہلی بیوی پر تشدد،بال اور بھنورے کاٹ دیئے

مظفرآباد(بیورورپورٹ)دوسری شادی کے لیے پہلی بیوی پر تشدد،بال اور بھنورے کاٹ دیئے۔دارالحکومت کے نواحی علاقہ پنجکوٹ میں سید ارشد گیلانی نے دوسری شادی کے لیے اپنی پہلی بیوی پر بدکاری کا الزام لگاتے ہوئے اس کے سر کے بال اور بھنورے کاٹ دیئے۔سیدہ سفینہ کاظمی ولد نذیر حسین کاظمی جو کہ لیپہ کی رہائشی ہے نوسال قبل اس کی شادی پنجکوٹ کے رہائشی سید ارشد گیلانی کے ساتھ ہوئی تھی ۔ان کے دو بچے ہیں سید ارشد گیلانی کو شادی کے بعد کسی اور سے پیار ہوگیا جس سے شادی کرنے کے لیے اس نے اپنی بیوی پر ظلم کے پہاڑ توڑدیئے ۔بیوی نے جب دوسری شادی کی اجازت نہ دی تو اپنے ہی بہنوئی سید سفیر گیلانی کے ساتھ بدکاری کا الزام لگاکر اپنے ماں باپ سمیت سفینہ بی بی پر تشدد کیا اور اس کے دادا جو کہ رنجاٹہ میں رہائش پذیر ہیں کے گھر لاکر چھوڑ دیا۔سفینہ بی بی نے قانونی کارروائی کے لیے ایس ایس پی مظفرآباد کو درخواست دیدی اور اپنے اوپر ہونے والے ظلم کی داستان بتانے کے لیے صحافیوں کے پاس پہنچ گئی۔سفینہ بی بی نے بتایا کہ نو سال قبل میری شادی ارشد گیلانی کے ساتھ ہوئی پہلے ایک دوسال تو اس کا رویہ میرے ساتھ اچھارہا لیکن اس کے بعد اسے کوئی اور لڑکی بھاگئی پہلے تو وہ مجھے مارپیٹ کر دوسری شادی کے لیے منانے کی کوشش کرتا رہا لیکن جب میں نے اپنے بچوں سے علیحدگی نہ کرنے کی ٹھان لی تو اس نے اپنے بہنوئی سید سفیر گیلانی کے ساتھ بدکاری کا الزام لگاکر مجھ پر ظلم کے پہاڑ توڑ دیے اس کا والد سید یعقوب گیلانی اور والدہ گلزار بی بی نے بھی مجھ پر تشدد کیا میں نے جب الزام کو جھوٹا قراردیاتو ارشد گیلانی نے پنجکوٹ اپنے گھر میں مجھے ذبح کر کے دفن کرنے کی دھمکی دی۔چھری میرے گلے پر رکھی اور مجھ سے زبردستی اس کے بہنوئی کے ساتھ بدکاری کرنے کے الزام کو سچا ماننے کے لیے کہا اور فون پر میری ریکارڈنگ کی رات کے پچھلے پہر مجھے گاڑی میں ڈال کر رنجاٹہ میں میرے دادا کے گھر چھوڑ گیا۔سفینہ بی بی نے بتایا کہ ارشد گیلانی گزشتہ شام اس لڑکی سے نکاح کرنے جارہا تھا جسے وہ پسند کرتا تھا اور میں ہی اس کے راستے کی سب سے بڑی دیوار تھی میں نے اسے اتنے تک کہا کہ بچوں کو میرے حوالے کردو تم بے شک دوسری شادی کرلو لیکن اس نے میری ایک نہ مانی اور میرے اوپر ظلم کے پہاڑ توڑتا رھا۔سفینہ بی بی نے بتایا کہ بھارت میں ہندو انتہا پسند اور بھارتی فوجی کشمیری خواتین کے بال کاٹ رہے ہیں میرے میاں نے بھی ان ہی جیسا عمل کیا ہے۔سفینہ بی بی نے صحافیوں کے ذریعے چیف جسٹس سپریم کورٹ،وزیراعظم آزادکشمیر،چیف سیکرٹری،انسپکٹرجنرل پولیس اور خفیہ اداروں کے سربراہان سے اپیل کی ہے کہ وہ اس کے اوپر ہونے والے ظلم کا نوٹس لیتے ہوئے سید ارشد گیلانی کے خلاف قانونی کارروائی کریں۔ تاکہ آئندہ کسی کو یہ جرات نہ ہوسکے کہ وہ کسی کی ماں ،بہن،بیٹی کے ساتھ ایسی حرکت کرنے سے پہلے 100دفعہ سوچے۔ایس ایس پی مظفرآباد نے صحافیوں کو بتایا کہ واقعہ کی اطلاع ملتے ہی فوری ایس ایچ او پنجگراں کو حکم دیا ہے کہ سید ارشد گیلانی اور اس واقعہ میں ملوث افراد کے خلاف قانونی کارروائی کرتے ہوئے انہیں قانون کے دائرہ میں لایا جائے۔انہوں نے کہا کہ خاتون کی داد رسی اولین ترجیح ہے۔واقعہ میں ملوث افراد کو کیفرکردار تک پہنچائیں گے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر