فنانس ڈیپارٹمنٹ پنجاب نے سرکاری ملازمین کے جی پی فنڈز پر کلہاڑا چلادیا

فنانس ڈیپارٹمنٹ پنجاب نے سرکاری ملازمین کے جی پی فنڈز پر کلہاڑا چلادیا

ملتان(ملک اعظم سے) فنانس ڈیپارٹمنٹ پنجاب میگا پراجیکٹس کے فنڈز کا بندوبست کرنے کیلئے لاکھوں سرکاری افسران اور ملازمین کے جی پی فنڈز پر شب خون مارنے میں کامیاب ہوگیا صوبائی حکومت کے احکامات پر فنانس ڈیپارٹمن نے اچانک جی پی فنڈز کی کٹوتی میں اضافہ کر دیا (بقیہ نمبر30صفحہ12پر )

اس کے ساتھ ہی جی پی فنڈز ایڈوانس لینے والوں کیلئے مشکلات کھڑی کردیں گئیں ریٹائرمنٹ پر جانے والے افسران اور ملازمین کیلئے جی پی فنڈ کیسز غیر ضروری التواء کا شکار ہوگئے معلوم ہوا ہے صوبائی حکومت کے پنجاب بھر میں 1 کھرب روپے سے زائد کے میگا پراجیکٹس پر کام جاری ہے فنانس ڈیپارٹمنٹ کے پاس ان پراجیکٹس کو فنڈنگ کیلئے خاطر خواہ فنڈز نہیں ہے جس کیوجہ سے صوبائی حکومت نے بنکوں سے قرض کے حصول کے بارے میں پالیسی تیار کی اس سلسلہ میں فنانس ڈیپارٹمنٹ نے سمری بھی تیار کی اس سلسلہ میں فنانس ڈیپارٹمنٹ نے سمری بھی تیار کرلی لیکن صوبائی حکومت نے ملک میں جاری سیاسی بحران کیوجہ سے یہ سمری مسترد کردی بنکوں سے قرض لینے جہاں ایک طرف صوبائی حکومت کی ناقص کارکردگی ایکسپوز ہوجاتی وہیں فنانس ڈیپارٹمنٹ کا مالی بحران بھی سامنے آجاتا ہے اس صورتحال کو کاؤنٹر کرنے کیلئے صوبائی حکومت نے ایک طرف ایپکا کو خوش کرکے پے سکیل ریوائز کرنے کا اعلان کردیا دوسری جانب اپنے مالی بحران کو کنٹرل کرنے کیلئے لاکھوں سرکاری افسران اور اہلکاروں کے جی پی فنڈز میں کٹوتی کا اضافہ کر دیا فنانس ڈیپارٹمنٹ نے اس حوالے سے ایک مراسلہ بھی جاری کردیا جس کیمطابق سکیل 1 کے ملازم کے جی پی فنڈ میں کٹوتی 337 روپے سے بڑھا کر 400 روپے سکیل 2 کے ملازم کی کٹوتی 596 روپے سے بڑھا کر 710 روپے سکیل 3 کے ملازم کی کٹوتی 646 روپے سے 770 رپے سکیل 4 کے ملازم کی کٹوتی 692 روپے سے بڑھا 830 روپے سکیل 5 کی کٹوتی 745 سے بڑحا کر 890 ، سکیل 6 کی کٹوتی میں 798 سے بڑھا کر 950 روپے ، سکیل 7کی کٹوتی 844 روپے سے بڑحا کر 1010 ، سکیل 8 کی کٹوتی 897 سے بڑھا کر 1070 روپے سکیل 9 کی کٹوتی 951 سے بڑھا کر 1140 روپے ، سکیل 9 کی کٹوتی 1012 سے بڑھا کر 1210 روپے، سکیل 11 کی کٹوتی 1081 سے بڑھا کر 1290 روپے سکیل 12 کی کٹوتی میں اضافہ کرکے 1851 کرکے 1290 روپے، سکیل 13 کی کٹوتی اضافہ کرکے 1851 روپے سے بڑھا کر 2220 روپے سکیل 14 کی کٹوتی میں اضافہ کرکے 2194 روپے سے بڑحا کر 2620 روپے سکیل 15 کی کٹوتی 2425 سے 2890 روپے سکیل 16 کی کٹوتی اضافہ کرکے 2806 سے 3340 روپے، سکیل 17 کے فی پی فنڈز کی کٹوتی میں اضافہ کرکے 4471 روپے سے 5360 روپے گریڈ 19 کی کٹوتی میں اضافہ کرکے 5998 سے 7180 روپے گریڈ 20 کی کٹوتی 6693 روپے سے بڑھا کر 8050 روپے گریڈ 21 کی کٹوتی میں اضافہ کرکے 7426 سے 8940 روپے گریڈ 22 کے جی پی فنڈ میں کٹوتی کی شرح 8210 روپے سے بڑھا کر 9880 روپے کر دیا گیا معلوم ہوا ہے اس کٹوتی کا اضافہ پے سکیل ریوائز کرنے کے ساتھ ہی کردیا گیا ہے جس کیوجہ سے لاکھوں سرکاری ملازمین پے سکیل ریوائز کرنے کے ثمرات سے محروم ہوگئے بتایا گیا فنانس ڈیپارٹمنٹ کی جانب سے ایک غیر اعلانیہ پالیسی پر عمل کیا جا رہا ہے جس کے تحت جی پی فنڈ ایڈوانس لینے والوں کے کیسز کو غیر ضروری التواء میں رکھا جا رہا ہے جبکہ ریٹائرمنٹ پر جانے والے افسران اور اہلکاروں کو جی پی فنڈز کے کیسز پر 6 سے 8 ماہ تک عمل نہیں کیا جاتا ہے ایسے کیسز ضلعی فنانس ڈیپارٹمنٹس غیر ضروری التواء میں ڈال دیئے جاتے ہیں جس کیوجہ سے سرکاری ملازمین بھی پریشانی کا شکار ہیں۔

مزید : ملتان صفحہ آخر